Sunday , November 19 2017
Home / کھیل کی خبریں / ہندوستان آج ویزاگ میں سیریز کامیابی کا خواہاں

ہندوستان آج ویزاگ میں سیریز کامیابی کا خواہاں

اجنکیا رہانے کے مقام پر منیش پانڈے کو موقع دیئے جانے کا امکان

وشاکھاپٹنم ۔13 فبروری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) گزشتہ رات کھیلے گئے مقابلے میں ایک جامع کامیابی کے بعد ہندوستانی ٹیم فتوحات کے سلسلے کو برقرار رکھتے ہوئے سری لنکا کے خلاف یہاں کھیلے جانے والے رواں سیریز کے تیسرے اور آخری مقابلے میں کامیابی کے ذریعہ متواتر دوسری سیریز میں کامیابی کیلئے کوشاں ہوگی ۔ دورۂ آسٹریلیا پر منعقدہ تین مقابلوں کی سیریز میں میزبان ٹیم کو 3-0 سے شکست دینے کے بعد کل یہاں ویزاگ میں ہندوستانی ٹیم کو ایک اور موقع دستیاب رہے گا کہ وہ مہمان سری لنکا کے خلاف رواں سیریز میں 2-1 کی کامیابی حاصل کرتے ہوئے متواتر دوسری ٹوئنٹی 20 سیریز اپنے نام کرے ۔ ہندوستان کو سیریز کے پہلے مقابلے میں ہزیمت ناک شکست برداشت کرنی پڑی تھی لیکن گزشتہ رات رانچی میں کھیلے گئے مقابلے میں 69 رنز کی کامیابی کے ذریعہ اس نے سیریز تاحال 1-1 سے برابر کردی ہے ۔ پونے کی وکٹ پر گھاس کی موجودگی کی وجہ سے ہندوستانی بیٹسمینوں کو کافی پریشانی برداشت کرنی پڑتی تھی لیکن رانچی کی سست وکٹ پر میزبان ٹیم نے کوئی غلط قدم نہیں اُٹھایا ۔ بیٹسمینوں نے جہاں ہمالیائی اسکور کھڑا کیا وہیں بولروں نے بھی اپنے مظاہروں پر مکمل قابو کی شاندار مثال پیش کی ہے ۔

گزشتہ مقابلے میں مہندر سنگھ دھونی کی قیادت کافی متاثر رہی جنھوں نے بیٹنگ صف بندی میں تبدیلی کرنے کے علاوہ وکٹ کی مناسبت سے بولروں کا بھی شاندار استعمال کیا ۔ دوسرے مقابلے میں ہندوستانی ٹیم نے نہ صرف وکٹ کے برتاؤ اور حالات کا بہترین استعمال کیا بلکہ اپنے منصوبوں کو بھی بہتر طریقہ سے روبہ عمل لایا ۔ ہندوستان کو اوپنرس شکھر دھون اور روہت شرما نے ایک بہترین شروعات فراہم کی جس کے بعد نوجوان بیٹسمین ہاردیک پانڈے کو بیٹنگ کیلئے اوپر بھیجا گیا تھا جنھوں نے کپتان کے فیصلے سے حتی الامکان انصاف کیا ہے لیکن یوراج سنگھ جنھیں نمبر 7 پر بیٹنگ کیلئے روانہ کیا گیا تھا انھیں وکٹ پر زیادہ وقت نہیں ملا اور وہ تیزی کے ساتھ رنز بنانے کی کوشش میں بغیر کوئی رن بنائے آؤٹ ہوگئے ۔ دھونی نے واضح کردیا ہے کہ چونکہ سرفہرست چار بیٹسمینوں کے مظاہرے انتہائی شاندار ہیں لہذا یوراج سنگھ کو اوپر نہیں بھیجا جاسکتا لیکن انھیں مزید مواقع دستیاب ہیں ۔ گزشتہ مقابلے میں دھون نے شاندار اور تیز رفتار نصف سنچری اسکور کی ہے جبکہ روہت شرما بھی بہتر فام میں دکھائی دیئے ۔ ابتدائی تین بیٹسمینوں میں اجنکیا رہانے کسی قدر جدوجہد کرتے نظر آئے اور ممکن ہے کہ کل یہاں کھیلے جانے والے مقابلے میں ان کے مقام پر منیش پانڈے کو موقع دیا جائے لیکن دھونی کامیابی حاصل کرنے والی ٹیم میں ردوبدل کے حق میں نہیں رہتے ہیں ۔ دھونی کی اس مقابلے میں کپتانی کے علاوہ وکٹ کیپنگ بھی شاندار رہی جنھوں نے پہلے ہی اوور میں نہ صرف روی چندرن اشون کو بولنگ کی ذمہ داری دی بلکہ پہلے اوور کی دوسری گیند پر ہی حریف ٹیم کے سب سے تجربہ کار بیٹسمین تلک رتنے دلشان کو انتہائی چست رفتاری سے اسٹمپ آؤٹ کیا جبکہ اہم موقع پر انھوں نے ایک اور اسٹمپ آؤٹ کے ذریعہ وکٹوں کے پیچھے اپنی تیز رفتاری دکھائی ہے ۔ سری لنکا کیلئے تشارا پریرا نے اس مقابلے میں ہیٹ ٹرک لینے کے علاوہ یہ کارنامہ انجام دینے والے پہلے سری لنکائی بولر ثابت ہوئے تاہم ان کا یہ مظاہرہ کافی دیر کے بعد ہوا ۔ سری لنکائی ٹیم اپنے سینئر بیٹسمین دلشان سے اہم مقابلے میں ٹیم کو کامیابی دلوانے والے مظاہرے کی اُمید کررہی ہے ۔ علاوہ ازیں فاسٹ بولروں کی جوڑی کسون رجیتا اور دشمنتا چمیرا کے ہمراہ داسن شناکا سے بھی بہتر بولنگ مظاہرہ کی توقع کررہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT