Tuesday , November 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / ہندوستان آج سری لنکا کیخلاف سیریز میں واپسی کیلئے کوشاں

ہندوستان آج سری لنکا کیخلاف سیریز میں واپسی کیلئے کوشاں

دھونی کے شہر رانچی میں آج دوسرا ٹوئنٹی 20 مقابلہ

رانچی 11 فروری (سیاست ڈاٹ کام) ناتجربہ کار سری لنکائی ٹیم کے خلاف وکٹ پر موجود گھاس پر کھیلے گئے پہلے ٹوئنٹی 20 مقابلہ میں حیران کن شکست کے بعد ہندوستانی ٹیم کل یہاں کھیلے جانے والے سیریز کے دوسرے مقابلہ میں کامیابی حاصل کرتے ہوئے رواں تین مقابلوں کی سیریز میں دلچسپی برقرار رکھنے کے لئے کوشاں ہے۔ پہلے مقابلہ میں شکست کے بعد ہندوستانی ٹیم کے کپتان مہندر سنگھ دھونی نے پونے کی وکٹ کو ’’انگلش وکٹ‘‘ قرار دیا تھا جہاں گیند کی رفتار کے علاوہ اس میں اُچھال بھی موجود تھا لیکن اب کپتان دھونی کے شہر رانچی میں ان کے شائقین اپنے کپتان کو بہتر مظاہرہ اور ٹیم کو کامیابی حاصل کرتا دیکھنا چاہتے ہیں۔ ہندوستانی ٹیم نے رانچی کے جے ایس سی اے انٹرنیشنل اسٹیڈیم کامپلکس میں تین ونڈے مقابلے کھیلے ہیں جس میں 300 سے زائد رنز اسکور کرنے کے علاوہ کسی بھی مقابلہ میں ٹیم کو شکست نہیں ہوئی ہے۔ حالانکہ آسٹریلیا کے خلاف کھیلے گئے مقابلہ میں نتیجہ حاصل نہیں ہوا تھا، اس کے باوجود اُمید کی جارہی ہے کہ یہاں کھیلا جانے والا یہ مقابلہ ہمالیائی اسکور کا مقابلہ ہوگا۔ دریں اثناء میدان پر جو تیاری کی جارہی ہے وہ کھلاڑیوں کے لئے تشویش کا باعث ہوسکتی ہے کیوں کہ انھیں میدان کے آؤٹ فیلڈ میں مشکلات پیش آسکتی ہیں۔ میدان کے عہدیداروں نے یہ دعویٰ کیا ہے کہ انھیں میدان کی تیاری میں زیادہ وقت نہیں دیا گیا ہے لہذا آؤٹ فیلڈ میں نقص ہوسکتے ہیں۔

سری لنکائی ٹیم میں کئی ایسے کھلاڑی موجود ہیں جنھیں زیادہ تجربہ نہیں ہے لیکن ابتدائی مقابلہ میں کامیابی کے بعد اِن کے حوصلے کافی بلند ہیں اور وہ یہاں کھیلے جانے والے ورلڈکپ سے قبل کل کے مقابلہ میں کامیابی اور سیریز اپنے نام کرنے کے خواہاں ہیں۔ سری لنکائی فاسٹ بولنگ کا شعبہ کسن رجیتا، دشونتا چمیرا اور دسن سناکا پر مشتمل ہے جس نے افتتاحی مقابلہ میں شاندار بولنگ کا مظاہرہ کیا ہے لیکن رانچی کی وکٹ پر اِن کا سخت امتحان ہوسکتا ہے۔ ہندوستانی ٹیم جس نے دورہ آسٹریلیا پر میزبان ٹیم کے خلاف 3-0 کی کامیابی حاصل کی تھی لیکن وہ سیریز میں دھونی کی ٹیم کے مڈل آرڈر کے کھلاڑیوں کو مظاہرہ کا زیادہ موقع نہیں ملا تھا لیکن پونے میں ٹاپ آرڈر کے ناکام ہونے کے بعد اُن پر زائد ذمہ داری عائد ہوئی تھی جس کو وہ بخوبی نبھا نہیں سکے۔ اشون نے حالانکہ وکٹ پر صبر آزما اننگز کھیلتے ہوئے ثابت کرنے کی کوشش کی تھی کہ کچھ دیر وکٹ پر رکنے سے رنز بنائے جاسکتے ہیں۔ اب جبکہ ٹوئنٹی 20 ورلڈکپ قریب ہے لہذا دھونی چاہتے ہیں کہ اِن کے بیٹسمین حالات کے اعتبار سے خود کو ہم آہنگ کرتے ہوئے ذمہ داری کا مظاہرہ کریں تاکہ ایشیاء کپ اور عالمی کپ میں بہتر نتائج حاصل کئے جاسکیں۔ دھونی کے ذہن میں خود اِن کا فارم بھی گشت کررہا ہوگا کیوں کہ بنگلہ دیش میں منعقد شدنی ایشیاء کپ سے قبل انھیں سری لنکا کے خلاف دو مقابلے دستیاب ہیں جس میں وہ بہتر مظاہرہ کرتے ہوئے اپنا فارم حاصل کرسکتے ہیں۔ دھونی کو مقابلہ بہترین طریقہ سے ختم کرنے والا کھلاڑی قرار دیا جاتا ہے لیکن اِن کی یہ ساکھ متاثر ہوئی ہے۔ کپتان کے لئے بہتر موقع ہے کہ وہ اپنے گھریلو شائقین کے روبرو ایک بڑی اننگز کھیلتے ہوئے اپنا فارم حاصل کرلیں۔

TOPPOPULARRECENT