Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / ہندوستان تمام مستحقین کو دیوالی پر میڈیکل ویزا عطا کریگا

ہندوستان تمام مستحقین کو دیوالی پر میڈیکل ویزا عطا کریگا

جگر کی پیوند کاری کیلئے ویزا کے اجراء کا تذکرہ ، وزیر خارجہ ہندوستان سشما سوراج کا بیان
نئی دہلی۔19 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیر خارجہ ہندوستان سشما سوراج نے آج کہا کہ دیوالی کے تہوار کے موقع پر آج ہندوستان تمام مستحق معاملات میں میڈیکل ویزا جو زیر التوا ہیں عطا کردے گا۔ وہ ایسی کئی درخواستوں پر جو پاکستانی شہریوں کی ہیں، مثبت ردعمل پہلے ہی ظاہر کرچکی ہیں۔ ایک پاکستانی خاتون آمنہ شامیم جس کے والد پہلے ہی سے دہلی میں زیر علاج ہیں اور جو ان سے ملاقات کرنا چاہتی ہے، ویزا کی درخواست کی ہے۔ سشما سوراج نے کہا کہ ہندوستانی ہائی کمیشن برائے پاکستان سے ربط پیدا کریں۔ ہم اس کی اجازت دیں گے۔ دیوالی کے تہوار کے موقع پر ہندوستان تمام مستحق معاملات میں جو زیر التوا ہیں آج ویزا عطا کرے گا۔ سشما سوراج نے اپنے ٹوئٹر پر اس کا انکشاف کیا۔ کل انہوں نے ہائی کمیشن ہندوستان برائے پاکستان کو ہدایت دی تھی کہ ایک پاکستانی بچے کو ہندوستان میں اپنے علاج کے لیے میڈیکل ویزا جاری کیا جائے۔ بچے کے والد کاشف نے سشما سوراج سے ٹوئٹر پر درخواست کی کہ وہ عبداللہ کے علاج کے لیے میڈیکل ویزا عطا کریں کیوں کہ اس کے جگر کے ہندوستان میں تخمینہ اور پیوند کاری کی شدید ضرورت ہے۔ وزیر خارجہ سشما سوراج نے کل اپنا ٹوئٹر پیام جاری کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے بچے کا علاج دوائوں کی عدم کی موجودگی کی وجہ سے تاخیر کا شکار نہیں ہوگا۔ میں نے ہندوستانی ہائی کمیشن کو طبی ویزا جاری کرنے کی ہدایت دی ہے چاچا کاشف۔ کاشف نے کہا کہ بچے کی دوائیں ختم ہونے کے قریب ہیں اور اسے فوری ہندوستان میں طبی مشورے کی ضرورت ہے۔ کل ایک اور ٹوئٹر میں سشما سوراج نے کہا تھا کہ ایک میڈیکل ویزا پاکستانی خاتون کے لیے پہلے ہی منظور کیا جاچکا ہے جس کے جگر کا آپریشن ہندوستان میں ہوچکا ہے۔ اس خاتون کا ایک بیٹا ہے رفیق میمن جس نے سشما سوراج سے اس کی والدہ کے لیے ویزا عطا کرنے مداخلت کی خواہش کی تھی۔ سشما سوراج نے نظیر احمد کی ویزا کی درخواست پر مثبت جواب دیتے ہوئے کہا کہ ایک 8 سالہ بچہ محمد احمد بھی میڈیکل ویزا کا منتظر ہے۔ ہم اسے بھی علاج کے لیے ہندوستان کا میڈیکل ویزا جاری کریںگے۔ سشما سوراج میڈیکل ویزا پاکستانی شہریوں کو جاری کرنے کے سلسلہ میں ہمدردانہ رویہ اختیار کی ہوئی ہیں۔ انہوں نے اس کا لحاظ کیے بغیر کے ہندوستان اور پاکستان کے تعلقات کشیدہ ہیں۔ کبھی بھی میڈیکل ویزا جاری کرنے کے معاملہ کو سرحد پار سے ریاست جموں کشمیر میں دہشت گردی کے ساتھ مربوط نہیں کیا اور فراق دلی سے تمام مستحق افراد کو ویزے جاری کرتی رہی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT