Wednesday , December 19 2018

ہندوستان سیمی فائنل میں داخل ، بنگلہ دیش کی عملاً دُرگت بن گئی

٭ ٹیم انڈیا کے 28 اوورز میں 115/3 کے بعد 302/6 ٭ ’ مین آف دی میچ ‘ روہت شرما (137) کی سنچری ٭ مشرف مرتضیٰ کی بنگلہ ٹیم 45 اوورز میں 193 پر آؤٹ

٭ ٹیم انڈیا کے 28 اوورز میں 115/3 کے بعد 302/6
٭ ’ مین آف دی میچ ‘ روہت شرما (137) کی سنچری
٭ مشرف مرتضیٰ کی بنگلہ ٹیم 45 اوورز میں 193 پر آؤٹ

ملبورن ، 19 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) روہت شرما نے اسٹروکس سے بھرپور سنچری بنائی جبکہ ڈیفنڈنگ چمپینس ہندوستان بڑی تیزی سے آئی سی سی ورلڈ کپ کے سیمی فائنلس میں رسائی حاصل کرلی جس کیلئے بدحال بنگلہ دیش کو آج یہاں یکطرفہ مقابلے میں 109 رنز سے شکست فاش دی گئی۔ روہت کی 126 گیندوں میں 137 رنز کی شاندار اننگز اور سریش رائنا (65) کے ساتھ صرف 15.5 اوورز میں 122 رنز کی چوتھی وکٹ کی رفاقت کے بل بوتے پر ہندوستان ایم سی جی (ملبورن کرکٹ گراؤنڈ) میں بیٹنگ کا انتخاب کرنے کے بعد 302/6 کا قابل ستائش اسکور کھڑا کرنے میں کامیاب ہوا۔ جواب میں بنگلہ دیش کبھی مسابقتی دوڑ میں دکھائی نہ دیئے اور ہندوستان نے کوئی خاص مشکل کے بغیر اپنے پڑوسیوں کو 45 اوورز میں 193 کے معمولی اسکور پر ڈھیر کردیا۔ لگاتار کامیابی کا سلسلہ مہیندر سنگھ دھونی اور اُن کے کھلاڑیوں کیلئے آگے ہی بڑھ رہا ہے ، جنھوں نے اب اس میگا ایونٹ میں مسلسل ساتویں جیت درج کرائی ہے۔ ہندوستان کا اب آسٹریلیا اور پاکستان کے درمیان 20 مارچ کو سڈنی میں تیسرے کوارٹرفائنل کے ونر سے مقابلہ ہوگا۔ آج کی فتح نے ہندوستان کی متواتر ورلڈ کپ فتوحات 11 کردی ہیں، جن میں سے چار گزشتہ ایڈیشن میں درج ہوئیں۔ ہندوستان کا غلبہ ایسا رہا ہے کہ جب کبھی انھوں نے اس ٹورنمنٹ میں پہلے بیٹنگ کی تو وہ 300 یا زائد اسکور کئے

اور ابھی تک سات میچوں میں اپوزیشن کی تمام 70 وکٹیں لئے ہیں۔ اومیش یادو (9 اوورز میں 4/31) اپنے سارے اسپل کے دوران ٹھیک نشانے پر گیندبازی کرتے رہے حالانکہ تمیم اقبال کے 25 رنز کی فی گیند ایک رن والی اننگز میں کئی باؤنڈریاں لگائی گئیں، جس کا خاتمہ اسی بولر کی گیند پر دھونی نے نیچا کیچ لیتے ہوئے کردیا۔ امرالقیس (5) عدم تال میل کی بناء رن آؤٹ ہوگئے۔ دو اِن فام بیٹسمین لیفٹ ہینڈر سومیا سرکار (29) اور محمود اللہ ریاض (21) نے 40 رنز کی رفاقت کے ذریعہ کچھ دیر ٹیم کو مزید نقصان نہ ہونے دیا، یہاں تک کہ شکھر دھون نے باؤنڈری لائن پر آخری الذکر کو عمدگی سے کیچ کرلیا۔ جیسے ہی محمود اللہ آؤٹ ہوئے ممکنہ نتیجے کے آثار نمایاں ہونے لگے جیسا کہ سومیا کو دھونی نے اپنی بائیں جانب چھلانگ لگا کر کیچ کیا اور شکیب الحسن کو رویندر جڈیجا کی گیند پر بیک ورڈ پوائنٹ پر کیچ کرلیا گیا۔ محمد سمیع (8 اوورز میں 2/37) نے اپنے وکٹوں کی تعداد 17 کرلی

جبکہ روی چندرن اشوین (10 اوورز میں 0/30) اور جڈیجا (8 اوورز میں 2/42) نے کافی تال میل سے بولنگ کی اور ایم سی جی کی بڑی باؤنڈریوں نے انھیں آسانی فراہم کی۔ تاہم آج کا دن ’مین آف دی میچ‘ روہت کے نام رہا ، جنھوں نے اپنی ساتویں او ڈی آئی سنچری 14 باؤنڈریوں اور تین چھکوں کے ساتھ بنائی جبکہ رائنا نے 57 گیندوں کی اپنی اننگز میں مساوی طور پر عمدہ شاٹس کھیلے۔ دونوں نے ٹیم انڈیا کو 28 اوورز میں 115/3 کی غیراطمینان بخش پوزیشن سے باہر نکال کر استحکام تک پہنچایا۔ ہندوستان کے دیگر بیٹسمنوں میں دھون نے 30 رنز بنائے جبکہ ویراٹ کوہلی (3)، اجنکیا رہانے (19) اور دھونی (6) ناکام ہوئے۔ تاہم جڈیجا اور اشوین نے ترتیب وار 23 اور 3 پر ناٹ آؤٹ رہتے ہوئے آخر میں چند مفید رنز جوڑے، اور قطعی ٹارگٹ بنگلہ دیش کیلئے ’پہاڑ‘ ثابت ہوا۔پیس بولر تسکین احمد نے سب سے زیادہ 3 وکٹس 69 رنز دے کرلئے جبکہ کپتان مشرف مرتضیٰ، روبل حسین اور شکیب کو فی کس ایک وکٹ ملی۔ بنگلہ دیش نے لیگ مرحلے میں بالخصوص انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے خلاف جو مظاہرہ کیا تھا، اُس کی جھلکیاں آج نہیں دیکھی گئیں اور اُن کی عملاً پٹائی ہوگئی۔

TOPPOPULARRECENT