Sunday , December 17 2017
Home / ہندوستان / ہندوستان مستحکم معاشی ترقی کی راہ پر گامزن

ہندوستان مستحکم معاشی ترقی کی راہ پر گامزن

نوٹ بندی اور جی ایس ٹی جیسے اصلاحات سے بڑی تبدیلی : اوپیک جنرل سکریٹری
نئی دہلی ۔ 10 اکتوبر۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان اس وقت ایک بڑی تبدیلی کے تجربہ سے گذر رہا ہے کیونکہ نئی اصلاحات جیسے نوٹ بندی اور جی ایس ٹی نے ملک کو ٹھوس ترقی کی راہ پر گامزن کیا ہے ۔ تیل کی کمپنیوں کی نمائندہ اوپیک کے سکریٹری جنرل محمود برکندو نے آج یہ بات کہی۔ انھوں نے انڈیا اینرجی فورم کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک متوسط طبقہ کی نمائندگی کو وسعت دے رہا ہے کیونکہ اس کی طلب بھی زیادہ پائی جاتی ہے ۔ نہ صرف توانائی بلکہ گڈس اینڈ سرویسیس میں ساری دنیا میں اُن کی طلب ہے ۔ انھوں نے کہاکہ ہندوستان کی معیشت ایک بڑی تعمیری تبدیلی سے گذر رہی ہے ۔ نئے اصلاحات کے ذریعہ جرأت مندانہ فیصلے کئے گئے ہیں اور وزیراعظم نریندر مودی کی نظریہ ساز قیادت میں ملک نے بالخصوص توانائی کے شعبہ میں زبردست ترقی کی راہ کو اپنایا ہے ۔ انھوں نے کہاکہ اصلاحات بشمول نوٹ بندی پالیسی ، گڈس اینڈ سرویسیس ٹیکس اور توانائی کے مختلف ذرائع سے موثر استفادہ کی جو کوششیں ہورہی ہیں اس کے نتیجہ میں ملک مضبوط ترقی اور استحکام کی راہ پر گامزن ہوگا ۔ انھوں نے مزید کہا کہ ٹرانسپورٹیشن سیکٹر میں ترقی ، کئی اشیاء اور خدمات کی برآمدات کو وسعت ، عالمی معیار کے آئی ٹی شعبہ اور مینوفیکچرنگ شعبہ میں غیرمعمولی استحکام کی وجہ سے ہندوستان نے بڑے پیمانہ پر معاشی تبدیلی کو یقینی بنایا ہے ۔ عالمی مارکٹ میں اسے تسلیم کیا جاتا ہے ۔ انھوں نے کہاکہ اوپیک بھی ہندوستان میں تجارتی رجحانات اور ان معاشی تبدیلیوں پر خصوصی توجہہ مرکوز کئے ہوئے ہے۔ ان سے اوپیک کے رکن ممالک کی بڑھتی آبادی کو بھی راست فائدہ ہوسکتا ہے ۔ بالخصوص اوپیک مستقبل میں تیل کی طلب کے سبب معاشی تبدیلیوں اور اس کے فوائد و اثرات پر خصوصی توجہہ دیئے ہوئے ہے۔ اوپیک کی اس بات پر بھی نظر ہے کہ عالمی سطح پر تیل کی طلب میں جو اضافہ ہورہا ہے اُس کا مرکز ہندوستان بنتا جارہا ہے ۔ ہمیں اندازہ ہے کہ 2040 ء تک ہندوستان کی تیل کی طلب میں 150 فیصد سے زیادہ اضافہ ہوگا ۔ یعنی موجودہ 4 ملین بیارل فی یوم سے بڑھکر یہ طلب 10.1 ملین بیارل یومیہ ہوجائے گی ۔ عالمی سطح پر تیل کی طلب میں ہندوستان کی مجموعی حصہ داری بھی 2040 ء تک موجودہ 4 فیصد سے بڑھکر 9 فیصد ہوجائے گی ۔ ہندوستان اس وقت دنیا کا تیسرا سب سے بڑا تیل کا صارف ملک ہے ۔

TOPPOPULARRECENT