Wednesday , September 19 2018
Home / Top Stories / ہندوستان میں رہنے والا ہرشہری ’’ہندو‘‘ ، مودی کی قیادت میں ملک کی ترقی یقینی : ڈپٹی چیف منسٹر گوا

ہندوستان میں رہنے والا ہرشہری ’’ہندو‘‘ ، مودی کی قیادت میں ملک کی ترقی یقینی : ڈپٹی چیف منسٹر گوا

پاناجی ۔ /25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) گوا کے ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ ہندوستان میں رہنے والا ہر ایک شہری ہندو ہے ۔ گوا کے ایک وزیر کی جانب سے اس متنازعہ ریمارک کے ایک دن بعد کہ نریندر مودی کی قیادت میں ہندوستان ایک ہندو راشٹرا بن جائے گا ۔ ریاست کے ڈپٹی چیف منسٹر ، فرانسس ڈیسوزا نے آج اس تنازعہ پر مزید تیل ڈالتے ہوئے کہ ہندوستان پہلے ہی سے

پاناجی ۔ /25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) گوا کے ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ ہندوستان میں رہنے والا ہر ایک شہری ہندو ہے ۔ گوا کے ایک وزیر کی جانب سے اس متنازعہ ریمارک کے ایک دن بعد کہ نریندر مودی کی قیادت میں ہندوستان ایک ہندو راشٹرا بن جائے گا ۔ ریاست کے ڈپٹی چیف منسٹر ، فرانسس ڈیسوزا نے آج اس تنازعہ پر مزید تیل ڈالتے ہوئے کہ ہندوستان پہلے ہی سے ایک ہندو راشٹرا ہے اور ہمیشہ ہندو راشٹرا رہے گا ۔ بی جے پی کے سینئر لیڈر ڈیسوزا نے اپنے سینئر لیڈر اور کابینی رفیق دیپک دھولیکر کی جانب سے کئے گئے ریمارکس کی حمایت کی ۔ دھولیکر جن کی پارٹی مہاراشٹرا وادی گومنتک پارٹی ہے ریاست کی حکمراں بی جے پی کی حلیف جماعت ہے ۔

انہوں نے کل کہا تھا کہ انہیں بھرپور یقین ہے کہ ہندوستان نریندر مودی کی قیادت میں ہندوستان راشٹرا کے طور پر ترقی کرے گا ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ مودی جی کی قیادت میں ملک زبردست ترقی کرے گا ۔ وزیراعظم اس سلسلہ میں کام کریں گے ۔ ریاستی اسمبلی میں مودی کی شاندار کامیابی پر تحریک مبارکباد پیش کرتے ہوئے مباحث کے دوران یہ بیان دیا ۔

ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ دھولیکر کے بیان کے غلط تشریح کی گئی جبکہ ہندوستان پہلے ہی ہندو راشٹرا ہے ۔ ہندوستان ایک ہندو ملک ہے یعنی انڈیا ہی ہندوستان ہے ۔ تمام ہندوستانی اس ہندوستان کے باشندے ہیں جس میں میریبشمول ہندو بھی شامل ہیں ۔ میں ایک کرسچن ہندو ہوں میں ہندوستانی ہوں۔ لہذا اب یہ کہنے کی ضرورت نہیں کہ یہ ایک ہندو راشٹرا ہے ۔ یہاں ہر ایک کو مل جل کر رہنا ہے یہی جمہوریت کا حسن ہے ۔گوا کے ایک وزیر نے کل جو متنازعہ بیان دیا تھا اس کے جواب میں ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ ہندوستان میں رہنے والے ہر شہری کو ہندو سمجھا جانا چاہئیے ۔

TOPPOPULARRECENT