Saturday , November 18 2017
Home / دنیا / ہندوستان میں عدم رواداری جیسی صورتحال کی تردید

ہندوستان میں عدم رواداری جیسی صورتحال کی تردید

غیرذمہ دارانہ بیانات دینے والے صرف دو چار لوگ ، جیٹلی کا دعویٰ
واشنگٹن ۔ 16 اپریل ۔(سیاست ڈاٹ کام) وزیر فینانس ارون جیٹلی نے کہا ہے کہ ہندوستان کے سیاسی میدان کے دونوں طرف سے تعلق رکھنے والے بعض افراد کی جانب سے چند غیرذمہ دارانہ بیانات دینے کے اکادکا واقعات پیش آئے ہیںلیکن اس کو ہرگز یہ نہیںکہا جاسکتا کہ ملک میں عدم رواداری کی صورتحال پیدا ہوگئی ہے ۔ جیٹلی نے عدم رواداری پر مبنی غیرذمہ دارانہ بیانات کو ’ہولناک‘ قرار دیا لیکن کہا کہ ہندوستان جیسے بڑے ملک میں یہ شاذ و نادر ہی پیش آنے والے اکا دکا واقعات ہیں۔ جیٹلی نے یہاں ہندوستانی میڈیا کے ساتھ راؤنڈ ٹیبل کانفرنس میں اظہارخیال کرتے ہوئے کہا کہ ’’ایسے اکادکا واقعات پیش آئے ہیں جن میں سیاسی میدان کی دونوں جانب سے چند افراد نے اس قسم کے غیرذمہ دارانہ بیانات دیئے ہیں لیکن اس کا مطلب ہرگز یہ نہیں ہیکہ (ہندوستانی) سرزمین پر اس طرح کی کوئی سرگرمی ہے ‘‘ ۔ عدم رواداری کے بعض اہم واقعات پر خصوصیت کے ساتھ توجہ مبذول کروائے جانے پر سینئر بی جے پی لیڈر جیٹلی نے کہا کہ ’’یہ انتہائی بدبختانہ

اور ہولناک واقعات ہیں لیکن ہندوستان جیسے کسی بڑے ملک میں یہ شاذ و نادر ہی پیش آنے والے اکا دکا واقعات ہیں‘‘ ۔ ہندوستان میں عدم رواداری کی صورتحال پیدا ہونے سے متعلق ایک سوال پر جیٹلی نے جواب دیا کہ حقیقت میں ایسا کچھ نہیں ہے بلکہ یہ خیال صرف میڈیا کی پیداوار ہے ۔ انھوں نے کہاکہ ’’زمینی حقائق پر دیکھئے جہاں بہت کچھ ہورہا ہے ۔ کیا یہ سب کچھ عدم رواداری ہے ؟ اس کا جواب منفی ( نا ) ہی ہوسکتا ہے‘‘۔ جیٹلی نے کہا کہ ’’ایک نیوز چینل بتاتا ہے کہ وہی چار مخصوص لوگ غیر ذمہ دارانہ بیانات دے رہے ہیں اور اس کے محور پر ایک کہانی بنادی جاتی ہے ۔ جب ان تبصروں کو سیاست کی وسیع تر میدان میں پیش کیا جاتا ہے تو دوچار لوگ تبصروں کے طورپر کچھ ایسے اوچھے بیاات دیتے ہیں جو نہیں دینا چاہئے ۔ زیادہ سے زیادہ ایسے چار ، پانچ یا چھ لوگ ہیں کیا آپ ان کو ملک میں  عدم رواداری کی فضاء قرار دے سکتے ہیں ؟ ‘‘۔

TOPPOPULARRECENT