Wednesday , November 22 2017
Home / کھیل کی خبریں / ہندوستان نمبرا یک ٹیم لیکن ہنوز امتحاں باقی:جونز

ہندوستان نمبرا یک ٹیم لیکن ہنوز امتحاں باقی:جونز

نئی دہلی ۔10 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام ) آسٹریلیائی ٹیم کے سابق آل راؤنڈر ڈین جونز نے بیرونی ٹیموں کی جانب سے دورۂ پاکستان سے انکار کو منافقت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یورپ سمیت دنیا بھر میں دہشت گرد حملے ہو رہے ہیں لیکن ٹیمیں سیکیورٹی کو بنیاد بنا کر پاکستان میں کھیلنے سے انکار کر رہی ہیں ۔ہندوستان کے دورہ پر موجود اسلام آباد یونائیٹڈ کے ہیڈ کوچ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستانی ٹیم اس وقت عالمی نمبر ایک ضرور ہے لیکن میرا ماننا ہے کہ کرکٹ میں نمبر ایک ٹیم نام کی کوئی چیز موجود نہیں۔ہندوستانی ٹیم پاکستان کا سامنا کیے بغیر عالمی نمبر ایک بنی ہے اور مجھے دونوں ٹیموں کے درمیان ٹسٹ سیریز دیکھ کر خوشی ہو گی۔یاد رہے کہ روایتی حریف پاکستان اور ہندوستان کے درمیان کشیدہ تعلقات کے سبب 2007 کے بعد سے کوئی مکمل سیریز نہیں کھیلی گئی اور ہندوستان انٹرنیشنل ایونٹس کے علاوہ پاکستان سے کھیلنے کیلئے انکار کرتا رہا ہے۔اس موقع پر انہوں نے پاکستان کرکٹ کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ دو تین سال کے دوران پاکستان کرکٹ میں کافی بہتری آئی ہے اور وہ پیشہ ورانہ یونٹ بن کر کھیل رہے ہیں۔ پاکستان سوپر لیگ سے نئے نوجوان کھلاڑی ملے ہیں اور انہیں صرف اپنا فرسٹ کلاس سسٹم بہتر کرنے کی ضرورت ہے۔اس موقع پر انہوں نے سیکیورٹی خدشات کو بنیاد بنا کر دورہ پاکستان سے انکار کرنے والی ٹیموں کو منافق قرار دیتے ہوئے کہا کہ لندن سمیت یورپ بھر میں دہشت گرد حملے ہوئے ہیں اور کھیلوں کے مقابلے معمول کے مطابق ہو رہے ہیں لیکن ٹیمیں پاکستان کا دورہ کرنے سے انکار کر رہی ہیں۔ یہ انتہائی منافقت ہے۔واضح رہے کہ 2009 میں سری لنکائی کرکٹ ٹیم پر لاہور میں دہشت گرد حملے کے بعد سے پاکستان پر بین الاقوامی کرکٹ کے دروزے بند ہیں اور آٹھ سال کے دوران زمبابوے کے علاوہ کسی بھی ٹسٹ ٹیم نے پاکستان کا دورہ نہیں کیا۔57 سالہ سابق آل راؤنڈر نے کہا کہ وقت گزرنے کے ساتھ کھلاڑیوں کی وکٹوں کے درمیان دوڑ کی صلاحیت کم ہوتی جا رہی ہے اور موجودہ دور میں مہندرا سنگھ دھونی واحد کھلاڑی ہیں جو سیدھا دوڑتے ہیں۔ ہم 80 کی دہے میں سنگلز اور ڈبلز پر زیادہ انحصار کرتے تھے کیونکہ میدان کافی بڑے ہوتے تھے اور اسی ٹیم کے زیادہ میچ جیتنے کے امکانات ہوتے تھے جو زیادہ سنگلز، ڈبلز رنز بناتی تھی لیکن آج کل کھلاڑی صرف بڑے بڑے شاٹس لگانے پر توجہ دیتے ہیں۔علاوہ ازیں انہوں نے مزید کہا کہ باہمی ونڈے سیریز بے معنی ہوچکی ہے اور کے برعکس سہ ملکی سیریز کھیلی جانی چاہیئے۔ٹسٹ کرکٹ میں عوام کی کم دلچسپی کو دیکھتے ہوئے ڈین جونز نے آئی سی سی کو ورلڈ ٹسٹ چیمپیئن شپ متعارف کروانے کا مشورہ بھی دیا۔انہوں نے کہا کہ دس ٹیموں کو دو گروپس میں تقسیم کرکے انہیں آپس میں چار، چار میچز کھلائے جائیں۔

TOPPOPULARRECENT