Monday , December 18 2017
Home / Top Stories / ہندوستان نے بیک وقت 20 سٹلائٹس خلاء میں چھوڑ دیا

ہندوستان نے بیک وقت 20 سٹلائٹس خلاء میں چھوڑ دیا

اسرو کا کارنامہ، وزیراعظم کی مبارکباد، روس اور امریکہ کے بعد ہند کو تیسرا مقام

سری ہری کوٹہ 22 جون (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے آج صرف 26 منٹ میں 20 سٹلائٹس کو کامیابی کے ساتھ خلاء میں داغتے ہوئے ایک نیا ریکارڈ قائم کیا ہے۔ ان میں 17 بیرونی سٹلائٹس کے علاوہ اس کا کرۂ ارض کا مشاہدہ کرنے والا سٹلائٹ بھی شامل ہے۔ ہندوستانی ادارہ برائے خلائی تحقیق (اسرو) کے پی ایس ایل وی C34 کو ذریعہ ستیش دھون خلائی مرکز کے لاؤنج پیڈ سے صبح 9 بجکر 36 منٹ پر خلاء میں داغا گیا اور وہ صرف 26 منٹ میں مدار میں داخل ہوگیا۔ ہندوستان کی طرف سے آج خلاء میں چھوڑے گئے 20 سٹلائٹس میں 13 امریکہ کے ہیں جن میں 12 مصنوعی سیارے جن کا وزن 4.7 کیلو ہے خلاء سے کرۂ ارض کی تصاویر لیں گے۔

ایک مصنوعی سیارہ 110 کیلو کا ہے کرۂ ارض کی عکس کشی کرنے والا یہ سٹلائٹ اسکائی سیاٹ ون ۔ 2 کہلایا جاتا ہے جس کو گوگل کی مملوکہ ایک کمپنی نے تیار کیا ہے۔ دیگر بیرونی سیٹلائٹس میں دو سٹلائٹس کنیڈا کے اور ایک ایک جرمنی اور انڈونیشیاء کے ہیں۔ اس تاریخی مشن کی کامیابی پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے اسرو کے چیرمین کرن کمار نے کہاکہ ’’صرف ایک پے لوڈ کے ذریعہ وقت واحد میں 20 سٹلائٹس کا داغا جانا خلاء میں اُڑنے کے لئے دراصل کئی پرندوں کو بیک وقت چھوڑنے کے مترادف ہے۔ قبل ازیں 2008 ء میں ہندوستان نے بہ یک وقت 10 سٹلائٹس کو خلاء میں چھوڑا تھا۔ لیکن بیک وقت ایک ہی پے لوڈ کیذریعہ سب سے زیادہ سٹلائٹس داغنے کا ریکارڈ روس کے پاس ہے جس نے 2014 میں بیک وقت 37 سٹلائٹس چھوڑا تھا۔ امریکہ کے خلائی ادارہ ناسا کو دوسرا مقام حاصل ہے جس نے بہ یک وقت 29 سٹلائٹس چھوڑا تھا۔ وزیراعظم نریندر مودی نے اسرو کے کارنامہ کی ستائش کرتے ہوئے کہاکہ ’’وقت واحد میں 20 سٹلائٹس! اسرو نئی حدوں سے تجاوز جاری رکھا ہے۔ اس یادگار کارنامہ کے لئے ہمارے سائنسدانوں کو مبارکباد‘‘۔ اُنھوں نے مزید کہاکہ ’’ہمارے خلائی پروگرام نے عوامی زندگیوں میں سائنس و ٹیکنالوجی کی بدلتی صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا ہے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT