Thursday , June 21 2018
Home / کھیل کی خبریں / ہندوستان و انگلینڈ کے مابین آج سیریز کا پہلا ونڈے میچ

ہندوستان و انگلینڈ کے مابین آج سیریز کا پہلا ونڈے میچ

برسٹل 24 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) ٹسٹ سیریز میں شرمناک شکست کے بعد پست حوصلوں کے ساتھ ہندوستانی ٹیم انگلینڈ کے خلاف کل سے پانچ ایک روزہ میچوں کی سیریز کی شروعات کرنے والی ہے اور ٹیم چاہتی ہے کہ ٹسٹ سیریز کی شکست کو پیچھے چھوڑتے ہوئے ونڈے سیریز میں ایک نئی شروعات کی جائے تاکہ کھویا ہوا وقار بحال ہوسکے ۔ ایک طرف جہاں ہندوستانی ٹیم کو انگلی

برسٹل 24 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) ٹسٹ سیریز میں شرمناک شکست کے بعد پست حوصلوں کے ساتھ ہندوستانی ٹیم انگلینڈ کے خلاف کل سے پانچ ایک روزہ میچوں کی سیریز کی شروعات کرنے والی ہے اور ٹیم چاہتی ہے کہ ٹسٹ سیریز کی شکست کو پیچھے چھوڑتے ہوئے ونڈے سیریز میں ایک نئی شروعات کی جائے تاکہ کھویا ہوا وقار بحال ہوسکے ۔ ایک طرف جہاں ہندوستانی ٹیم کو انگلینڈ کے خلاف ٹسٹ سیریز میں 1 – 3 کی شکست کے بعد ونڈے سیریز میں بہترین مظاہرہ کرنے کی کوشش کرنا ہوگا وہیں اسے آئندہ سال ہونے والے ورلڈ کپ کو ذہن میں رکھتے ہوئے اپنے انداز میں بھی توازن پیدا کرنا ہوگا ۔ آئندہ سال کا ورلڈ کپ آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں ہونے والا ہے ۔ اب جبکہ اس ٹورنمنٹ کو صرف چھ ماہ کا وقت باقی رہ گیا ہے ہندوستانی ٹیم کیلئے اس سے قبل ہونے والا ہر ونڈے میچ ورلڈ کپ کے دفاع کی تیاریوں کی حیثیت رکھے گا ۔

آئندہ سال کے ورلڈ کپ کو ذہن میں رکھتے ہوئے ہندوستانی ٹیم کو اپنی تیاریوں پر اور خاص طور پر نوجوان کھلاڑیوں کو تیار کرنے پر توجہ مرکوز کرنی ہوگی ۔ ہندوستان اب انگلینڈ کے خلاف ونڈے سیریز کے بعد وطن میں ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز کھیلے گی اور پھر آسٹریلیا کے دورہ میں ایک سہ رخی سیریز کھیلی جائیگی ۔ سہ رخی سیریز کے علاوہ آسٹریلیا میں ٹسٹ سیریز بھی ہوگی ۔ ہندوستانی سلیکٹرس نے پہلے ہی صورتحال کا جائزہ لے لیا ہے اور 17 رکنی جو ٹیم منتخب کی گئی ہے وہ ان کی سوچ کو ظاہر کرتی ہے ۔ سنجو سیمسن اور کرن شرما سلیکٹرس کی سوچ کو ظاہر کرتے ہیں جو ٹیم میں شامل کئے گئے ہیں اور ٹیم میں نہ صرف دوسرے وکٹ کیپر کو بلکہ تیسرے اسپنر کو بھی شامل کرنے پر توجہ دی گئی ہے ۔ تاہم ایک سوال یہ ہے کہ ان نوجوانوں کو انگلینڈ کے خلاف پانچ میچوں کی سیریز میں کتنے مواقع مل سکتے ہیں۔

یہ صورتحال اس لئے پیدا ہوئی ہے کیونکہ مڈل آرڈر بیٹنگ ‘ آل راونڈ اسپنر کی جگہ کیلئے ٹیم میں پہلے ہی کئی دعویدار شامل ہیں۔ قطعی گیارہ کھلاڑیوں میں آل راونڈ اسپین بولنگ کیلئے رویندر جڈیجہ اور آر اشون طاقتور دعیودار ہیں ۔ جاریہ سال کے اوائل میں نیوزی لینڈ میں چوتھے ونڈے میچ میں جو ہیملٹن میں کھیلا گیا تھا اسٹیورٹ بنی کو متبادل کے طور پر متعارف کروایا گیا تھا اور بنگلہ دیش میں انہوں نے جس طرح کا مظاہرہ کیا وہ ذہن میں رکھتے ہوئے کہا جاسکتا ہے کہ انگلش حالات میں انہیں

بہتر مدد مل سکتی ہے ۔ تاہم ہندوستانی کپتان مہیندر سنگھ دھونی ٹیم میں چوتھے میڈیم فاسٹ بولر کی شمولیت کے تعلق سے پس و پیش کا شکار رہتے ہیں کیونکہ اس کے نتیجہ میں اوور ریٹ سست ہوجاتا ہے ۔ یہ دیکھنا دلچسپی سے خالی نہ ہوگا کہ آیا وہ ایک بار پھر دو اسپنرس کو شامل کرنے کے فارمولے پر ہی ابتداء سے عمل کرتے ہیں یا نہیں ۔ چاہے برسٹل میں حالات کیسے ہی ہوں۔ دھونی کی سوچ کا جمعہ کو مڈل سیکس کے خلاف ہوئے وارم اپ گیم سے پتہ چلا جب انہوں نے اسٹیورٹ بنی کو بولنگ نہیں دی تھی ۔ اس دن بھونیشور کمار اور محمد سمیع نے ہی چھوٹے اسپیلس میں بولنگ کی تھی جس سے یہ اشارہ ملا ہے کہ ٹیم مینجمنٹ چاہتا ہے کہ ان دونوں بولرس کو اصل مقابلوں میں اپنی کارکردگی دکھانے کا موقع مل سکے ۔ دوسری جانب انگلینڈ کی ٹیم ٹسٹ سیریز میں شاندار کامیابی کے بعد پرجوش ہے اور وہ ٹسٹ سیریز میں کئے گئے بہتر مظاہرہ کے سلسلہ کو ونڈے سیریز میں بھی جاری رکھنے کی کوشش کریگی ۔ انگلش ٹیم بھی آئندہ سال کے اوائل میں ہونے والے ورلڈ کپ کو ذہن میں رکھتے ہوئے اپنی تیاریوں پر توجہ مرکوز کئے ہوئے ہیں اور ان حالات میں دونوں ٹیموں کے مابین اچھا مقابلہ دیکھنے کو مل سکتا ہے ۔ انگلش ٹیم میں ونڈے سیریز کیلئے کچھ تبدیلیاں بھی کی گئی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT