Wednesday , December 19 2018

ہندوستان کا آج انگلینڈ کے خلاف وارم اپ مقابلہ

میر پور ۔ 18 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پست حوصلوں سے پریشان ہندوستانی ٹیم کل آئی سی سی ٹوئنٹی20 ورلڈ کپ میں اپنا دوسرا اور آخری وارم اپ مقابلہ انگلینڈ کے خلاف کھیلے گی اور وہ اس مقابلہ میں کامیابی کے ذریعہ اپنے ناقص مظاہروں کو پیچھے چھوڑنے کی خواہاں ہوگی۔ انگلینڈ کے خلاف ہندوستانی ٹیم کیلئے کامیابی اس لئے بھی ضروری ہے کیونکہ جمعہ کے دن ہند

میر پور ۔ 18 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پست حوصلوں سے پریشان ہندوستانی ٹیم کل آئی سی سی ٹوئنٹی20 ورلڈ کپ میں اپنا دوسرا اور آخری وارم اپ مقابلہ انگلینڈ کے خلاف کھیلے گی اور وہ اس مقابلہ میں کامیابی کے ذریعہ اپنے ناقص مظاہروں کو پیچھے چھوڑنے کی خواہاں ہوگی۔ انگلینڈ کے خلاف ہندوستانی ٹیم کیلئے کامیابی اس لئے بھی ضروری ہے کیونکہ جمعہ کے دن ہندوستان کا ورلڈ کپ میں پہلا مقابلہ پاکستان کے خلاف ہوگا۔ علاوہ ازیں ہندوستانی ٹیم کو گذشتہ رات کھیلے گئے پہلے وارم اپ مقابلہ میں سری لنکا کے خلاف 5 رنز کی شکست برداشت کرنی پڑی۔ تاہم اس مقابلہ میں مثبت نتیجہ ٹیم میں واپسی کرنے والے دو بائیں ہاتھ کے جارحانہ بیٹسمینوں یوراج سنگھ اور سریش رائنا کی جانب سے اسکور بنایا جانا ہے۔ یوراج نے 33 رنز اور رائنا نے 41 رنز اسکور کئے۔

تاہم وہ بہتر آغاز کے باوجود ٹیم کو کامیابی سے ہمکنار نہیں کرپائے۔ مذکورہ کھلاڑیوں کی جانب سے رن بنایا جانا ہندوستانی ٹیم کیلئے خوش آئند ہے کیونکہ یوراج سنگھ نے ہندوستان کے گذشتہ 5 ٹوئنٹی 20 مقابلوں میں 4 مرتبہ مین آف دی میچ حاصل کیا ہے اور ان کا فام میں رہنا ٹیم کیلئے خوش آئند ہوگا۔ اجنکیا راہنے کا ناقص مظاہرہ اور اوپنرس روہت شرما کے ہمراہ شکھردھون کا ٹیم کو بہتر آغاز فراہم نہ کرنا تشویش کا باعث ہے۔ امید کی جارہی ہیکہ راہنے کو اننگز کے آغاز کا موقع فراہم کیا جاسکتا ہے کیونکہ وہ آئی پی ایل میں راجستھان رائلس کیلئے کامیاب اوپنر ثابت ہوئے ہیں۔ نیز انہیں روہت شرما یا شکھردھون کے مقام پر اننگز کے آغاز کیلئے روانہ کیا جاسکتا ہے اور عین ممکن ہیکہ شکھردھون کو روکتے ہوئے روہت شرما اور اجنکیا راہنے کو اننگز کے آغاز کی ذمہ داری دی جائے گی کیونکہ مہندر سنگھ دھونی نے روہت شرما کو بحیثیت اوپنر پسندیدہ قرار دیا ہے۔ روی چندرن اشون اور رویندر جڈیجہ ٹیم میں شامل دو اہم اسپنرس ہیں اور دونوں ہی بولنگ آل راونڈرس کی حیثیت سے ٹیم کیلئے بہتر کھلاڑی ہیں اور انہیں امیت مشرا پر سبقت حاصل رہے گی حالانکہ انہیں جب کبھی موقع دیا گیا انہوں نے مایوس نہیں کیا۔ محمد سمیع بلاشبہ ہندوستان کے نمبر ایک فاسٹ بولر ہیں اور ان کی قیادت میں بھونیشور کمار ورون آرون دیگر دو فاسٹ بولرس ہوں گے۔

بھونیشور کمار نے سری لنکا کے خلاف منعقدہ مقابلہ کے آخری اوور میں 17 رنز دیئے تھے جبکہ میچ کیلئے نقصاندہ ثابت ہوا اور اس طرح اترپردیش کے فاسٹ بولر دباؤ میں ہے حالانکہ دھونی کیلئے یہ ایک عرصہ سے اہم بولر ثابت ہورہے ہیں۔ موہت شرما 15 کھلاڑیوں میں شامل وہ واحد بولر تھے جنہیں سری لنکا کے خلاف موقع نہیں ملا لیکن امید کی جارہی ہیکہ انگلینڈ کے خلاف انہیں موقع مل جائے گا۔ امید کی جارہی ہیکہ کپتان مہندر سنگھ دھونی بھی انگلینڈ کے خلاف بیٹنگ پریکٹس کرلیں گے کیونکہ انہوں نے سری لنکا کے خلاف بیٹنگ نہیں کی ہے۔ انگلینڈ میں کپتان اسٹیورٹ براڈ زخمی ہونے کی وجہ سے ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز میں شرکت نہیں کر پائے تھے لیکن انگلینڈ نے ویسٹ انڈیز کو آخری ٹوئنٹی 20 میں شکست دی ہے جس سے اس کے کھلاڑیوں کے حوصلے بلند ہیں۔ انگلینڈ میں لیوک رائیڈ، روی بوپرا اور ایان مرگن مقابلہ کا رخ بدلنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT