Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / ہندوستان کو مسلمانوں سے پاک کرنے کا وقت آگیا

ہندوستان کو مسلمانوں سے پاک کرنے کا وقت آگیا

سادھوی پراچی کا ایک اور متنازعہ شوشہ ۔ ملک کو کانگریس سے پاک کرنے کا مشن مکمل
دہرہ دون 7 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک اور تنازعہ پیدا کرتی ہوئی وشوا ہندو پریشد کی لیڈر سادھوی پراچی نے آج کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ ہندوستان کو مسلمانو ں سے پاک کردیا جائے ۔ سادھوی پراچی اس سے قبل بھی اپنی بکواس کے ذریعہ کئی تنازعات پیدا کرچکی ہیں۔ انہوں نے ادعا کیا کہ ملک کو کانگریس سے پاک کرنے کا جو نظریہ تھا وہ پورا ہوچکا ہے اور اب وقت آگیا ہے کہ اس ملک کو مسلمانوں سے پاک کیا جائے ۔ راؤرکی میں خطاب کرتے ہوئے پراچی نے کہا کہ اب جبکہ ہم ملک کو کانگریس سے پاک کرنے کا مشن پورا کرچکے ہیں ایسے میں وقت آگیا ہے کہ ہندوستان کو مسلمانوں سے پاک کیا جائے ۔ ہم اس سمت میں کام کر رہے ہیں۔ راؤرکی میں گذشتہ ہفتے پیش آئے فرقہ وارانہ جھڑپوں میں 32 افراد زخمی ہوگئے تھے ۔ یہ جھڑپیں دو فرقوں کے مابین ایک بک اسٹور کا تخلیہ کروانے کے سلسلہ میںہوئی تھیں۔ خان پور کے رکن اسمبلی کنور پرانو سنگھ کے مکان پر حملہ کیا گیا تھا اور یہ الزام عائد کیا گیا تھا کہ یہاں ایک فرقہ کی مقدس کتاب کی بے حرمتی کی گئی ہے ۔ سادھوی نے ادعا کیا کہ پرانو سنگھ کے مکان پر حملہ ایک پہلے سے طئے شدہ سازش کا حصہ تھا ۔ پرانو سنگھ ان نو کانگریس ارکان اسمبلی میں شامل تھے جنہوں نے حال ہی میں چیف منسٹر ہریش راوت کے خلاف بغاوت کی تھی اور بی جے پی میں شامل ہوگئے تھے ۔ مجوزہ اتر پردیش اسمبلی انتخابات کے تعلق سے پراچی نے کہا کہ اگر بی جے پی ‘ یوگی آدتیہ ناتھ کو چیف منسٹر کے امیدوار کی حیثیت سے پیش کرتی ہے تو اسے کم از کم 300 نشستوں پر کامیابی حاصل ہوگی ۔ پراچی اکثر و بیشتر متنازعہ بیانات دینے کیلے جانی جاتی ہیں۔ انہوںن ے حال ہی میں کہا تھا کہ بالی ووڈ کے تینوں خانس سلمان ‘ شاہ رخ اور عامر کی فلموں کا بائیکاٹ کیا جانا چاہئے ۔ انہوں نے تمام مسلم تعلیمی اداروں بشمول علیگڈھ مسلم یونیورسٹی کی سی بی آئی تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا تھا ۔انہوںنے دارالعلوم دیبند کے بشمول تمام مدارس کی بھی تحقیقات کا مطالبہ کیا تھا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT