Sunday , June 24 2018
Home / Top Stories / ہندوستان کو ہندوؤں اور مسلمانوں کو لڑانے والی حکومت نہیں چاہئے

ہندوستان کو ہندوؤں اور مسلمانوں کو لڑانے والی حکومت نہیں چاہئے

رامناتھ پورم (ٹاملناڈو)21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام)مرکز میں ایک ’’غریب حامی اور سیکولر حکومت‘‘ کے قیام پر زور دیتے ہوئے نائب صدر کانگریس راہول گاندھی نے آج کہا کہ ہندوستان کو ایسی حکومت کی ضرورت نہیں ہے جو ’’ہندوؤں کو مسلمانوں سے لڑاتی ہو‘‘ وہ واضح طور پر بی جے پی کی طرف اشارہ کررہے تھے۔ایک انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا

رامناتھ پورم (ٹاملناڈو)21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام)مرکز میں ایک ’’غریب حامی اور سیکولر حکومت‘‘ کے قیام پر زور دیتے ہوئے نائب صدر کانگریس راہول گاندھی نے آج کہا کہ ہندوستان کو ایسی حکومت کی ضرورت نہیں ہے جو ’’ہندوؤں کو مسلمانوں سے لڑاتی ہو‘‘ وہ واضح طور پر بی جے پی کی طرف اشارہ کررہے تھے۔ایک انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چونکہ یہ لوک سبھا انتخابات ہیں، اس لئے مقامی ٹامل پارٹیاں جن کے ساتھ کانگریس انتخابی معاہدہ کرنے سے قاصر رہی دہلی میں حکومت تشکیل نہیں دے سکیں گی ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو ایسی حکومت کی ضرورت نہیں ہے جو ایک ریاست کو دوسری ریاست کے خلاف کردیتی ہو۔ انہوں نے کانگریس کارکنوں پر اظہار فخر کرتے ہوئے کہا کہ یہ تمام پرجوش ہیں اور کانگریس کے پرچم تلے انتخابات میں مقابلے کیلئے تیار ہیں۔ ہم نے کسی سمجھوتہ کی ضرورت نہیں ہے کانگریس تن تنہا انتخابی مقابلہ کرسکتی ہے ۔ اپنی دیرینہ حلیف ڈی ایم کے کے مارچ 2013 میں کانگریس سے ترک تعلق کا حوالہ دیتے ہوئے جذبات سے بھر پور آواز میں انہوں نے کہا کہ جاریہ سال ماہ قبل انتخابات قومی پارٹی کی پیشکش کو بڑی دراوڑی پارٹی نے ٹھکرا دیا کیونکہ اسے سری لنکا کے ٹامل نژاد افراد کی کوئی فکر نہیں ہے ۔ انہوں نے اعتماد ظاہر کیا کہ 24 اپریل کو مقرر لوک سبھا انتخابات میں کانگریس اچھا مظاہرہ کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے وزارت عظمی کے امیدوار نریندر مودی گجرات کی ترقی کے نمونے کی بات کرتے ہیں انہیں ٹاملناڈو کی ترقی کے نمونہ کا مشاہدہ کرنا چاہئے جو گجرات کی بہ نسبت زیادہ بہتر ہے ۔

ٹاملناڈو نے ثابت کردیا ہے کہ ٹامل عوام کتنے باصلاحیت ہیں ۔ کانگریس ٹاملناڈو کے تمام 39 حلقوں میں مقابلہ کررہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یو پی اے دور حکومت نے عوام کو بااختیار بنایا ہے ۔ غذائی طمانیت قانون اور حق معلومات قانون منظور کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کرپشن کی بات کرتی ہے لیکن اس کا خاتمہ کرنے کی کوئی تجویز پیش نہیں کرتی ۔ انہوں نے بی جے پی کے انتخابی منشور کا حوالہ دیا جس میں کرپشن کے خاتمہ کی کوئی تجویز پیش نہیں کی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لوک پال بل کی منظوری کا سہرا کانگریس کے سر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ کرپشن کے خلاف ایک زبردست ہتھیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حالانکہ اپوزیشن اس بل کی منظوری روکنے کوشاں تھی کانگریس نے اس کی منظوری یقینی بنائی۔ انہوں نے کہا کہ اگر اپوزیشن کو واقع کرپشن کی فکر تھی تو اس نے اس قانون کی منظوری میں رکاوٹیں ڈالنے کی کوشش کیوں کی۔

TOPPOPULARRECENT