Wednesday , November 22 2017
Home / کھیل کی خبریں / ہندوستان کو 22 سال بعد سری لنکا میں ٹسٹ سیریز جیتنے کا موقع

ہندوستان کو 22 سال بعد سری لنکا میں ٹسٹ سیریز جیتنے کا موقع

آج دونوں ٹیموں کے درمیان تیسرے اور فیصلہ کن مقابلے کا آغاز

کولمبو ۔ 27 اگسٹ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستانی کرکٹ ٹیم سری لنکائی سرزمین پر 22 سال میں پہلی ٹسٹ سیریز کی کامیابی کیلئے کوشاں ہے جیسا کہ دونوں ٹیموں کے درمیان کھیلی جارہی تین مقابلوں کی سیریز 1-1 سے برابر ہے اور دونوں ٹیموں کے درمیان تیسرے اور فیصلہ کن ٹسٹ کا کل یہاں آغاز ہورہا ہے ۔ ویراٹ کوہلی بحیثیت کپتان اپنی پہلی کامیابی گزشتہ مقابلے میں حاصل کرپائے ہیں جیسا کہ ہندوستانی ٹیم نے پی سارا اوول میں منعقدہ دوسرے ٹسٹ میں 278 رنز کی کامیابی حاصل کی تھی جس کی بدولت ہندوستانی ٹیم نے سیریز کو برابر کیاہے۔ آخری مرتبہ سری لنکائی سرزمین پر محمد اظہرالدین کی قیادت میں ہندوستانی ٹیم نے 1993 ء کی سیریز میں 1-0 کی کامیابی حاصل کی تھی ۔ دریں اثناء ویراٹ کوہلی کی پانچ بولروں کی حکمت عملی بہتر ثابت ہورہی ہے جیسا کہ گال میں منعقدہ پہلے ٹسٹ میں ٹیم کا حصہ رہنے والے ہربھجن سنگھ کو خارج کرتے ہوئے ان کے مقام پر آل راؤنڈر اسٹورٹ بنی کو شامل کیا گیا تھا ۔ پانچ بولروں کی حکمت عملی کے بدولت ہندوستانی ٹیم 40 وکٹوں کے حصول کو یقینی بنایا ہے ۔ روی چندرن اشون کے شاندار فام جس میں انھوں نے 4 اننگز میں تاحال 17 وکٹیں حاصل کی ہیں ، اس کی بدولت اب تک سیریز میں کھیلے گئے 9 دنوں کے کھیل میں 8 دن ہندوستانی ٹیم مقابلے میں بھاری رہی ۔ گزشتہ مقابلے کی چوتھی اننگز میں اشون نے پانچ وکٹیں حاصل کی تھیں جس کی بدولت ہندوستانی ٹیم نے میزبان کو 134 رنز پر ڈھیر کردیا تھا۔ اشون کے ہمراہ امیت مشرا بھی ٹیم کیلئے اہم بولر ثابت ہورہے ہیں

جنھوں نے سیریز میں تاحال 12 وکٹیں حاصل کرنے کے علاوہ بیٹنگ میں بھی اپنی موجودگی کا احساس دلوارہے ہیں ۔ اشون اور مشرا کی یہ جوڑی سری لنکائی بیٹسمینوں کیلئے مسائل کھڑے کررہی ہے جب کہ ایشانت شرما کی قیادت میں فاسٹ بولنگ شعبہ بھی بہتر مظاہرہ کررہا ہے ۔ ٹیم میں اسٹورٹ بنی کو شامل کیا گیا ہے ۔ جنھیں پانچویں بولر اور لوور آرڈر میں بیٹسمین کی ذمہ داری نبھانے کیلئے شامل کیا گیا ہے ۔ تاہم وہ اُتنے متاثر کن مظاہرے نہیں کرپائے ہیں جبکہ اوول سے ایس ایس سی کا میدان مختلف ہوگا ۔ ہندوستانی بیٹنگ شعبے میں بھی تبدیلیاں ہوئی ہیں جیسا کہ گزشتہ مقابلے میں اجنکیا رہانے کو تیسرے نمبر پر بیٹنگ کیلئے ترقی دی گئی اور اس مقام پر ناکام ہونے والے روہت شرما کو پانچویں مقام پر کھلایا گیا ہے ۔ اس تجربہ کے بعد ٹیم کی پانچ بولروں کی حکمت عملی کے نتائج ظاہر کرتے ہیں کہ ٹیم میں موجود مخصوص بیٹسمین چتیشور پجارا کی ٹیم میں شمولیت مشکل دکھائی دیتی ہے لیکن اوپنرس کی جوڑی شکھر دھون اور مرلی وجئے کے سیریز سے باہر ہونے کے بعد ممکن ہے کہ پجارا اننگز کا آغاز کریں گے ۔ علاوہ ازیں 32 سالہ نمن اوجھا کو بالاخر اپنے ٹسٹ کیرئیر کے آغاز کا موقع مل رہا ہے جبکہ کرون نیر کو ہنوز اپنی باری کا انتظار کرنا پڑے گا ۔ دوسری جانب سری لنکائی ٹیم کو اپنے سابق کپتان کمارا سنگاکارا کی سبکدوشی کے بعد پیدا ہونے والی بڑی خلاء کو پُر کرنا ہے ۔ اُمید کی جارہی ہے کہ اُپل تھرنگا سابق کھلاڑی سنگاکارا کے مقام پر ٹیم میں شامل کئے جائیں گے ۔ اور وہ نمبر 3 پر بیٹنگ کریں گے جس کی وجہ سے انجلیو میتھوز کا نمبر 4 اور لہرو تھرمینے نمبر 5 پر بیٹنگ کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT