Saturday , December 15 2018

ہندوستان کیساتھ امن مذاکرات کی تائید کی جائے گی : جنرل باجوہ

اسلام آباد ۔ 21 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے آج ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کے ساتھ ہماری سیویلین حکومت اگر مختلف مسائل کی یکسوئی کیلئے بات چیت کو ترجیح دیتی ہے تو اس اقدام کی میں تائید کروں گا۔ فوجی سربراہ نے سینیٹ (پارلیمنٹ کا ایوان بالا) کو سیکوریٹی کی صورتحال اور علاقائی معاملات کے بارے میں تفصیلات بتائیں۔ بی بی سی اردو کے مطابق انہوں نے ہندوستان کے ساتھ امن مذاکرات کی تائید کی اور کہا کہ جنگ کسی بھی مسئلہ کا حل نہیں ہمیں صرف اور صرف بات چیت کو ترجیح دینی چاہئے اور موجودہ صورتحال میں پاکستان اگر ہندوستان کے ساتھ امن مذاکرات کرنا چاہتا ہے تو ملک کی فوج اس قدم کی بھرپور تائید کرے گی جبکہ انہوں نے یہ بھی واضح کردیا کہ پاکستانی افواج اپنے تمام پڑوسی ممالک بشمول ہندوستان کے ساتھ دوستانہ تعلقات کو ترجیح دیتی ہے۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی دلچسپ ہوگا کہ گذشتہ چھ سالوں میں پہلی بار فوجی قیادت نے پارلیمنٹ ہاؤس پہنچ کر ارکان پارلیمان کو سیکوریٹی کی صورتحال کی تفصیلات فراہم کی۔ قبل ازیں مئی 2011ء میں اس وقت کے فوجی سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی اور سابق آئی ایس آئی سربراہ لیفٹننٹ جنرل احمد شجاع پاشا نے پارلیمنٹ کے مشترکہ سیشن میں شرکت کرتے ہوئے ایبٹ آباد آپریشن کی تفصیلات بتائی تھیں جس میں القاعدہ سربراہ اسامہ بن لادن کو امریکی فوج نے ہلاک کردیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT