Thursday , July 19 2018
Home / کھیل کی خبریں / ہندوستان کی ایشیاکپ میزبانی خطرہ میں

ہندوستان کی ایشیاکپ میزبانی خطرہ میں

دبئی ۔8 ڈسمبر(سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان اور پاکستان کے درمیان پہلے سے ہی کرکٹ تعلقات سخت کشیدگی شکار ہیں اور پاکستان کرکٹ بورڈ نے دوممالک کے درمیان دو طرفہ کرکٹ سیریز منعقد کرنے کے معاہدے کی پاسداری نہ کرنے پر بی سی سی آئی کے خلاف 70 ملین ڈالرس معاوضہ کا دعویٰ کررکھا ہے اور اب، بی سی سی آئی کے حکام کا خیال ہے کہ ہندوستان ایشیا کپ 2018 ء کی میزبانی گنوا سکتا ہے جو جون 2018 ء میں ہوگا کیونکہ آیا پاکستان کی میزبانی کی جائے یا نہیں اس کا فیصلہ ہنوز نہیں ہوا ہے۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے بی سی سی آئی کے ایک عہدیدار نے کہا اگر ہم کو مرکز سے پاکستان کی جونئیر ٹیم کی میزبانی کرنے کی اجازت نہیں ملی تو ممکن نہیں ہے کہ ہم پڑوسی ملک کی سینئر ٹیم کی میزبانی کریں گے۔ دونوں ملکوں کے درمیان سیاسی کشیدگی سے کرکٹ کے بین الاقوامی تعلقات دونوں ملکوں کے درمیان منجمد ہیں۔ بی سی سی آئی کے عہدیدار نے بیان میں مزید کہا کہ حکومت نے ابھی تک فیصلہ نہیں کیا ہے کہ آیا پاکستان کرکٹ کھلاڑیوں کو ہندوستان میں کھیلنے کی اجازت دی جائے گی یا نہیں حالانکہ ایشیائی ایتھلیٹکس چیمپئن شپ میں حصہ لینے کے لئے پاکستانی کھلاڑیوں کو ویزا دیا گیا تھا، لیکن حکومت نے کہا ہے کہ کرکٹ کا معاملہ تھوڑا مختلف ہے، کیونکہ اس کے ساتھ دونوں ممالک کے جذباتی تعلقات ہیں۔ جب ہم نے درخواست کے ساتھ حکومت سے رابطہ کیا تو، ہمیں ان سے کوئی جواب نہیں مل سکا، لیکن ہمیں تیزی سے فیصلہ کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ ہمیں جلد ہی ایشین کرکٹ کونسل کو مطلع کرنا ہے۔یاد رہے کہ قبل ازیں سپریم کورٹ کی جانب سے تشکیل کردہ کمیٹی (سی اے اے) نے دوسرے ملک میں ٹورنمنٹ کی میزبانی پر تبادلہ خیال کیا ہے۔21 نومبر کے سی او اے اجلاس میں کہا گیا کہ یہ واضح نہیں ہے کہ ہندوستان کی حکومت پاکستان کو ٹورنمنٹ کے لئے اپنے ملک کا سفر کرنے کی اجازت دے گی اور اگر نہیں، تو بی سی سی آئی کو ایشیائی کرکٹ کونسل (اے اے اے) کو مطلع کرنے کی ضرورت ہے تاکہ ایک متبادل میزبان ملک کو حتمی طور منتخب کیا جاسکے ۔ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان آخری دو طرفہ سیریز 2012-13 میں ہندوستان میں تین ونڈے اور دو ٹوئنٹی20 پر مشتمل کھیلی گئی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT