Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ہندوستان کی تاریخی ورثہ کی حفاظت کے لیے مین اسکرپٹ طریقہ اپنانے پر زور

ہندوستان کی تاریخی ورثہ کی حفاظت کے لیے مین اسکرپٹ طریقہ اپنانے پر زور

مخطوطات کی اہمیت و افادیت پر قومی ورکشاپ ، ڈاکٹر اوشا سریش کا خطاب
حیدرآباد ۔ 16 ۔ مارچ : ( تبارک نیوز ) : تاریخ ہندوستان کا اگر مشاہدہ کرنا ہو تو چاہیے کہ وہ مخطوطات کو ملاحظہ کریں ۔ ہمارے ملک کی ساری تاریخ صرف قلمی نسخہ جات / مخطوطات میں محفوظ ہے ۔ ڈاکٹر اوشا سریش سابقہ ڈائرکٹر کرناٹک آرکائیوز آج صبح اسٹیٹ آرکائیوز اینڈ ریسرچ سنٹر تارناکہ میں افتتاحی اجلاس کو مخاطب کرتے ہوئے کیا ۔ زمانہ قدیم سے یہ رواج رہا ہے کہ تاریخی واقعات کو قلمبند کرنے کے لیے لوگ قلمی نسخہ مخطوطات پر محفوظ کرتے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان اپنے تاریخی ورثہ کی حفاظت اور ماضی کے حالات کو محفوظ رکھ سکتا ہے تو اسے چاہیے کہ وہ مین اسکرپٹ کی عصری طریقوں سے حفاظت کے ذریعہ محفوظ کریں ۔ ڈاکٹر اوشا سریش نے کہا کہ اہم تر ریکارڈ بہ زبان فارسی / سنسکرت / اردو میں موجود ہیں اگر اس کی صحیح نگہداشت نہ ہو تو ہم اپنے ماضی کو فراموش کردیں گے ۔ ہم اس کی حفاظت کرنے میں کامیاب ہوں گے تب ہی آنے والی نسل کو حقیقی معنی میں ہماری تہذیب تاریخ و تمدن کے بارے میں واقف کرواسکیں گے ۔ ڈاکٹر زرینہ پروین ڈائرکٹر آرکائیوز اینڈ ریسرچ سنٹر نے اپنے صدارتی خطاب میں کہا کہ اسٹیٹ آرکائیوز تلنگانہ میں سب سے زیادہ قلمی نسخہ / مخطوطات محفوظ ہیں اور اس کے ذریعہ نہ صرف ملک بلکہ بیرون ملک کے تشگان علم و محققین اس سے کماحقہ استفادہ کرتے ہیں ۔ ڈائرکٹر نے مزید کہا کہ اسٹیٹ آرکائیوز میں 669 قلمی نسخہ موجود ہیں جو دور صلب سلطانی قطب شاہی و آصف جاہی پر مشتمل ہیں ان میں زبان فارسی اور عربی شامل ہیں ۔ جبکہ قطب شاہی و آصف جاہی سلاطین سے متعلق بیش بہا خزانہ تاریخ قطب شاہی ، محاصر نظامی ( لہ لہ ستیارام ) میں موجود ہے جو دنیائے علم اس کو مستند مانتی ہے ۔ ڈائرکٹر نے کہا کہ زمانہ قدیم میں جو فارسی رائج تھی اب اس میں تبدیلی کے بعد موجودہ دور کی فارسی میں قدیم کتب کی اشاعت حکومت ہند کے تعاون سے عمل میں لائی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اسٹیٹ آرکائیوز میں جملہ ایک لاکھ 55 ہزار ورقی نسخہ جات محفوظ ہیں یہ ریاست کا ایک اہم علمی ذخیرہ کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ موجودہ عصری دور تعلیم میں فن خطاطی / قلمی نسخہ جات کی پہچان اور مخطوطات سے متعلق نوجوانوں کو تعلیمی نصاب میں شامل کیا جائے تاکہ آنے والے دور میں ہمارا ملک اپنے ماضی ، حال اور مستقبل سے کماحقہ واقف ہوسکے ۔ شریمتی کیرتی سری واستو کوآرڈینٹر نیشنل مشن فارمین اسکرپٹ حکومت ہند نے اسٹیٹ آرکائیوز میں محفوظ علمی ، تاریخی ، ادبی ، ثقافتی اقدار پر مشتمل موجود محفوظ سرمایہ پر حکومت تلنگانہ اور متعلقہ محکمہ کے عہدیداروں کو مبارکباد پیش کی کہ وہ اس تاریخی اہمیت حاصل ریکارڈ کو بہتر انداز میں نگہداشت کی ہے ۔ ورکشاپ کا 20 مارچ کو اختتام ہوگا ۔۔

TOPPOPULARRECENT