Thursday , November 23 2017
Home / ہندوستان / ’’ہندی ۔ چینی بھائی بھائی‘‘ مشہور نعرہ کی یاد دہانی

’’ہندی ۔ چینی بھائی بھائی‘‘ مشہور نعرہ کی یاد دہانی

ڈوکلام تنازعہ سنگین نہیں ، بات چیت ہی واحد حل : دلائی لاما
نئی دہلی۔9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ڈوکلام تعطل ’’زیادہ سنگین‘‘ نہ ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے دلائی لاما نے ’’ہندی۔ چینی بھائی بھائی‘‘ نعرہ کی یاد دلائی۔ 1950ء کے دہے میں اس نعرے نے دونوں پڑوسی ممالک کو قریب کرنے میں نمایاں رول ادا کیا تھا۔ 81 سالہ تبت کے روحانی رہنما نے کہا کہ کوئی بھی مسئلہ بات چیت کے ذریعہ حل کیا جاسکتا ہے اور 21 ویں صدی کا نعرہ مذاکرات ہونا چاہئے۔ یہی ایک راستہ ہے۔ ایک طرف کامیابی اور دوسری طرف شکست، دقیانوسی سوچ ہے۔ آج کے اس دور میں ہر ملک ایک دوسرے پر منحصر ہے۔ دلائی لاما آج ایڈیٹرس گلڈ آف انڈیا کے زیراہتمام راجندر ماتھر میموریل لیکچر دے رہے تھے۔ انہوں نے خود کو ہندوستان کا شاگرد قرار دیتے ہوئے چین کو بطور تنقید کہا کہ وہ ہندوستان میں بہت کچھ کرسکتے ہیں کیونکہ یہاں آزادی ہے جبکہ چین میں آزادی نہیں اور یہ انہیں پسند نہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت دو پڑوسی ممالک کے مابین کسی قدر کشیدگی ہے لیکن وہ سمجھتے ہیں کہ یہ زیادہ سنگین معاملہ نہیں۔ ہمیں عوام اور حکومت کے مابین فرق کرنے کی ضرورت ہے۔ ان کا یہ موقف ہے کہ ’’ہندی۔ چینی بھائی بھائی‘‘ ہی اس مسئلہ کا واحد حل ہے۔ دلائی لاما نے کہا کہ ہندوستان اور چین کو مل جل کر رہنا ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ بسااوقات پروپگنڈہ یا غلط اطلاعات صورتحال کو پیچیدہ بنادیتے ہیں۔ چین اور سنٹرل تبتن اتھاریٹی کے مابین بات چیت کے احیاء کے امکانات سے متعلق سوال پر انہوں نے کہا کہ کمیونسٹ پارٹی آف چین کی مجوزہ 19 ویں نیشنل کانگریس کے بعد بات چیت ہوسکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT