Sunday , November 19 2017
Home / Top Stories / ہند۔امریکی تعلقات برسوں سے مستحکم و مضبوط : ارون جیٹلی

ہند۔امریکی تعلقات برسوں سے مستحکم و مضبوط : ارون جیٹلی

WASHINGTON, APR 21 (UNI):- Union Minister for Finance, Corporate Affairs and Defence Arun Jaitley meeting with the Finance Minister of Australia Mathias Cormann, in Washington D.C on Saturday. UNI PHOTO-34U

عالمی دفاعی کمپنیوں کو ہندوستان میں یونٹس کے قیام کیلئے حوصلہ افزائی کی جارہی ہے
واشنگٹن ۔22 اپریل۔(سیاست ڈاٹ کام) وزیر فینانس ارون جیٹلی نے کہاکہ ہندوستان اور امریکہ کے درمیان تعلقات برسوں سے مستحکم اور مضبوط ہیں۔ یہ تعلقات بلاشبہ شعوری حد تک طاقتور سطح کو پہونچ گئے ہیں ۔ دونوں ملکوں میں حکومتوں کی تبدیلی کی مدافعت کرتے ہوئے انھوں نے کہاکہ حکومت ہند اب ٹرمپ نظم و نسق کے ساتھ مضبوط باہمی تعلقات کیلئے کام کررہی ہے ۔ امریکہ میں ہندوستانی سفیر نوتیج سرنا کی جانب سے ترتیب دیئے گئے استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے ارون جیٹلی نے کہاکہ ہند۔امریکی تعلقات نے دونوں ملکوں کو ایک نئی جہت عطا کی ہے ۔ باہمی روابط میں جو شعوری پن واضح ہوتا ہے وہ یہ کہ امریکہ کے نئے انتظامیہ کے ساتھ ہی ہمارے تعلقات ایک عظیم مراعات کا حصہ معلوم ہوتے ہیں ۔ ارون جیٹلی نے کل امریکی کانگریس سکریٹری ویلبر راس سے  ملاقات کی تھی جو ٹرمپ نظم و نسق کے تحت دونوں ملکوں کے درمیان پہلی کابینی سطح کی بات چیت تھی ۔ ارون جیٹلی نے کہاکہ گزشتہ کئی دہوں سے ہند۔ امریکہ تعلقات میں غیرمعمولی اضافہ ہوا ہے اور اب تک اس میں پہلے سے زیادہ مضبوطی آئی ہے ۔ میں نے کل امریکی کامرس سکریٹری سے ملاقات کی تھی اور کل میں امریکی ٹریژ سکریٹری سے ملاقات کروں گا ۔ یہ نئے ٹرمپ نظم و نسق اور حکومت ہند کے درمیان پہلا سرکاری سطح کا رابطہ ہے ۔ ارون جیٹلی ہندوستانی وفد کی قیادت کرتے ہوئے یہاں پہونچے ہیں ۔ وہ یہاں بین الاقوامی مالیاتی فنڈ اور ورلڈ بنک کے سالانہ اجلاسوں میں شرکت کررہے ہے ۔ ہندوستان کی ترقیاتی پالیسی پر اظہار خیال کرتے ہوئے ارون جیٹلی نے کہا کہ گزشتہ 3 سال کے دوران عالمی سطح پر سست روی کے باوجود ہندوستان نے 7 فیصد ترقی کی شرح حاصل کی ہے ۔ ہندوستان اس وقت ساری دنیا کے لئے ایک کھلی مارکٹ کے طورپر اُبھر رہا ہے۔ ہمارے کئی شعبے بین الاقوامی سرمایہ کاری کیلئے کھلے ہوئے ہیں اور ہم نے اپنے ملک کو پرکشش سرمایہ کاری کا مرکز بنادیا ہے ۔ ہندوستان نے عالمی دفاعی کمپنیوں کی بھی حوصلہ افزائی کی ہے کہ وہ اس ملک میں اپنی دفاعی یونٹوں کو قائم کریں اور ہندوستانی فرمس کے ساتھ تعاون کرتے ہوئے دفاعی آلات تیار کرسکتے ہیں۔ ہماری تبدیل شدہ پالیسی کے تحت ہم نے دنیا کے ماباقی حصوں سے خریداری پر بھی توجہ مرکوز کی ہے لیکن اس کے ساتھ ہی عالمی دفاعی بڑی کمپنیوں کے ساتھ اشتراک عمل کو بھی وسعت دے رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT