Wednesday , September 26 2018
Home / ہندوستان / ہند۔پاک روابط کی بہتری میں ’’سیاست‘‘ حائل

ہند۔پاک روابط کی بہتری میں ’’سیاست‘‘ حائل

کولکتہ ۔ 17 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی ہائی کمشنر متعینہ ہند عبدالباسط نے آج کہا ہے کہ ’’سیاست یا مسائل‘‘ باہمی روابط کو بہتر بنانے میں رکاوٹ بنے ہوئے ہیں۔ حالانکہ سرحد کی دونوں طرف عوام بہتر تعلقات اور ترقی کے خواہاں ہے۔ آج کلکتہ چیمبر آف کامرس کی جانب سے منعقدہ خصوصی سیشن بعنوان ’’ہندوستان اور پاکستان کے مابین تجارتی رواب

کولکتہ ۔ 17 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی ہائی کمشنر متعینہ ہند عبدالباسط نے آج کہا ہے کہ ’’سیاست یا مسائل‘‘ باہمی روابط کو بہتر بنانے میں رکاوٹ بنے ہوئے ہیں۔ حالانکہ سرحد کی دونوں طرف عوام بہتر تعلقات اور ترقی کے خواہاں ہے۔ آج کلکتہ چیمبر آف کامرس کی جانب سے منعقدہ خصوصی سیشن بعنوان ’’ہندوستان اور پاکستان کے مابین تجارتی روابط کا فروغ‘‘ خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جہاں دونوں طرف کی عوام بہتر تعلقات کی خواہشمند ہیں، وہیں سیاست ہمیں متحد ہونے نہیں دیتی۔ وہ یہاں تک کہنے کیلئے مجبور ہیں کہ ہندوستان اور پاکستان کے مابین سیاست بسا اوقات منطقی نتیجہ تک پہنچنے میں بھی رکاوٹ بنتی ہے۔ انہوں نے توقع ظاہر کی کہ اب وقت آچکا ہے کہ ہم سیاست پر منطق کی کامیابی یقینی بنائیں۔ گزشتہ 67 سال کے دوران دونوں ممالک ایک دوسرے کو مورد الزام قرار دینے میں مصروف رہے۔ تاہم انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ پاکستان میں گزشتہ انتخابات اس لحاظ سے منفرد تھے کہ ایک بھی مخالف ہندوستان بیان نہیں دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں عوام کا موقف بالکل واضح ہے ۔

وہ باہمی مفادات اور ایک دوسرے کی مساویانہ سالمیت کی بنیاد پر تعلقات کے خواہاں ہیں۔ پاکستانی سفیر نے کہا کہ انہیں اس بات پر دکھ ہوتا ہے کہ ممبئی یا دیگر مقامات پر پاکستانی نمائش کی اجازت نہیں دی جاتی۔ دونوں ممالک کے مابین سیاحتی ویزا کے بارے میں انہوں نے کہا کہ اگر حقیقت پسندانہ موقف اختیار کیا جائے تو یہ کام جلد از جلد ہوسکتا ہے۔ پاکستانی ہائی کمشنر نے بتایا کہ ہندوستان کے ساتھ ڈسمبر میں باہمی کرکٹ سیریز کی بحالی کیلئے ان کا ملک کافی سخت محنت کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ہندوستان کرکٹ ٹیم کو ایک دوسرے کے ساتھ کھیل شروع کرنا چاہئے ۔ ڈسمبر میں دونوں ممالک کی ٹیموں کی سیریز مقرر ہے اور ہم اسے یقینی بنانے کیلئے کافی کوشش کر رہے ہیں۔ سیریز کیلئے امکانی مقام کے بارے میں پوچھے جانے پر انہوں نے کہا کہ یہ ہندوستان یا دبئی یا کسی اور مقام پر ہوسکتی ہے۔ انہوں نے توقع ظاہر کی کہ ہندوستان کو بہت جلد بلا امتیاز مارکٹ رسائی کی سہولت فراہم کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT