Thursday , January 18 2018
Home / Top Stories / ہند۔پاک مذاکرات کے احیاء کی سمت پیشرفت

ہند۔پاک مذاکرات کے احیاء کی سمت پیشرفت

اسلام آباد / نئی دہلی ۔ 3 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان اور پاکستان آج مذاکرات کے احیاء کی طرف بڑھتے دکھائی دیئے جبکہ معتمد خارجہ سبرامنیم جئے شنکر کی یہاں بات چیت کو دونوں فریقوں کی جانب سے ’’جمود شکن‘‘ قرار دیا گیا۔ سات ماہ کے تعطل کے بعد مذاکرات کا احیاء کرتے ہوئے ہند و پاک نے آج ایک دوسرے کے اندیشوں اور مفادات پر تبادلہ خیال ک

اسلام آباد / نئی دہلی ۔ 3 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان اور پاکستان آج مذاکرات کے احیاء کی طرف بڑھتے دکھائی دیئے جبکہ معتمد خارجہ سبرامنیم جئے شنکر کی یہاں بات چیت کو دونوں فریقوں کی جانب سے ’’جمود شکن‘‘ قرار دیا گیا۔ سات ماہ کے تعطل کے بعد مذاکرات کا احیاء کرتے ہوئے ہند و پاک نے آج ایک دوسرے کے اندیشوں اور مفادات پر تبادلہ خیال کیا۔ جئے شنکر نے دہشت گردی کا مسئلہ بشمول ممبئی حملہ اپنے پاکستانی ہم منصب کے ساتھ بات چیت کے دوران اُٹھایا۔ جئے شنکر آج صبح اپنی سارک یاترا کے سلسلہ میں یہاں پہونچے۔ اُنھوں نے میزبان معتمد خارجہ چودھری سے بات چیت کے دوران اُنھیں ہندوستانی قائدین کی سارک کے بارے میں توقعات سے واقف کروایا

اور کہاکہ ہندوستان اپنے تمام پڑوسی ممالک کے ساتھ مستحکم تعلقات کا عزم رکھتا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ سرحد پار دہشت گردی سے ہندوستان کو جو اندیشے لاحق ہیں، وہ اُن کا اعادہ کرنا چاہتے ہیں۔ اُنھوں نے معتمد خارجہ پاکستان کے ساتھ ایک گھنٹہ طویل بات چیت کے بعد بیان دیتے ہوئے کہاکہ ممبئی دہشت گرد حملہ کا حوالہ بھی دیا گیا ہے۔ ہندوستان 2008 ء کے ممبئی دہشت گرد حملہ کے ملزمین پر مقدمہ میں مسلسل تاخیر کے بارے میں اندیشوں کا شکار ہے۔ بعدازاں جئے شنکر نے وزیراعظم پاکستان نواز شریف اور اُن کے مشیر برائے اُمور خارجہ و قومی سلامتی سرتاج عزیز سے ملاقات کی اور پھر وزیراعظم کے خصوصی مددگار طارق فاطمی سے بھی ان کی ملاقات ہوئی۔ جئے شنکر نے ادعا کیاکہ بات چیت تعمیری اور مثبت ماحول میں ہوئی ہے۔

پاکستان نے اجلاس کو جمود توڑنے والی تبدیلی قرار دیا ہے۔ دفتر خارجہ پاکستان کی ترجمان تسنیم اسلم نے آج کی بات چیت کا خلاصہ کرتے ہوئے اسے ’’جمود شکن‘‘ قرار دیا، جس سے ہندوستانی ذرائع نے بھی اتفاق کیا۔ آج کی سرگرمی سے ایسا ظاہر ہوا کہ دونوں فریق اپنے مذاکرات کے احیاء کی سمت بڑھ رہے ہیں ، جو سات ماہ قبل معطل ہوگئی تھی، جب ہندوستان نے معتمد خارجہ سطح کی بات چیت کو لمحہ آخر محض اس لئے منسوخ کردیا تھا کہ نئی دہلی میں پاکستانی ہائی کمشنر نے کشمیری علحدگی پسندگی کے ساتھ مشاورتیں منعقد کئے تھے۔ وزارت امور خارجہ کے ترجمان سید اکبر الدین نے نئی دہلی میں کہا کہ دونوں معتمدین خارجہ باہمی تعلقات میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT