Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / ہند ۔ بلجیم تجارتی تعلقات کو فروغ دینے کی کوشش

ہند ۔ بلجیم تجارتی تعلقات کو فروغ دینے کی کوشش

بندرگاہ وشاکھا پٹنم سے راست بحری جہاز کے آغاز پر غور
حیدرآباد۔/19اگسٹ، ( سیاست نیوز) ریاست آندھرا پردیش کے وشاکھاپٹنم میں سمندری ساحل پر واقع وشاکھاپٹنم پورٹ (بندرگاہ ) سے ہند ۔ بلجیم دونوں ممالک کے مابین تجارتی تعلقات کو فروغ دینے کے مقصد سے وشاکھاپٹنم سے راست بلجیم کیلئے شپس (پانی کے جہازوں ) کا آغاز کرنے کی تجویز پر سنجیدگی سے غور کیا جارہا ہے۔ بلجیم ایمبسیڈر (سفیر ) برائے ہند مسٹر جان لوکس (JHON LOOKS) نے اس بات کا انکشاف کیا۔ انہوں نے بتایا کہ یوروپی ممالک میں بالخصوص بلجیم سے ہندوستانی مشرقی ساحلی پورٹس ( بندرگاہوں ) کے ذریعہ تجارتی تعلقات کو فروغ دینے کے مقصد سے یوروپی دو اہم پورٹس ( بندرگاہوں ) آنٹیورپ پورٹ کے نمائندوں پر مشتمل ٹیم وشاکھاپٹنم کے دورہ پر آئی ہوئی ہے یہ ٹیم وشاکھاپٹنم سے راست یوروپی ممالک بالخصوص بلجیم تک شپس کے ذریعہ تجارتی تعلقات کے فروغ کا تفصیلی جائزہ لے رہی ہے۔ اس ٹیم کے دورہ کو پیش نظر رکھتے ہوئے مسٹر جان لوکس سفیر بلجیم برائے ہند متعینہ دہلی بھی وشاکھاپٹنم کے دورہ پر آئے ہوئے ہیں۔ مسٹر جان لوکس نے وشاکھاپٹنم میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ وشاکھاپٹنم میں انہیں زبردست مثبت ردِعمل حاصل ہوا ہے اورکہا کہ وشاکھاپٹنم پورٹ کے پاس زبردست سہولتیں حاصل ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ بلجیم سے اب تک ہندوستان میں مشرقی ساحل کیلئے راست سرویسیس پائے جاتے ہیں۔ آنٹیورپ پورٹ کے چیف کمرشیل آفیسر نے بتایا کہ وشاکھاپٹنم پورٹ سے ادویات، جڑی بوٹیوں، مچھلیوں اور غذائی پراڈکٹس کی برآمدات کرنے کے زرین مواقع حاصل ہیں۔ سفیر بلجیم برائے ہند مسٹر جان نے آنٹیورپ پورٹ کے نمائندوں پر مشتمل ٹیم کے ہمراہ وشاکھاپٹنم پورٹ پر واقع کنٹینرس ٹرمنل کا تفصیلی معائنہ کیا اور پھر اس ٹیم نے وہاں سے کشتیوں کے ذریعہ سفر کرتے ہوئے وشاکھاپٹنم بندرگاہ ( پورٹ ) کے دیگر شعبوں کا بھی تفصیلی معائنہ کرکے معلومات حاصل کی بعد ازاں وشاکھاپٹنم پورٹ چیرمین ( صدر نشین وشاکھاپٹنم بندرگاہ ) مسٹر ایم ٹی کرشنا بابو سے ملاقات کرکے تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ مسٹر جان نے بتایا کہ وشاکھاپٹنم پورٹ عہدیداروں کے ساتھ ہوئی بات چیت بہت ہی خوشگوار و مثبت انداز میں رہی۔ لہذا انہوں نے اس توقع کا اظہار کیا کہ بہت جلد بلجیم اور ہندوستان بالخصوص ریاست آندھرا پردیش کے ساتھ تجارتی تعلقات انتہائی مستحکم ہوں گے۔

TOPPOPULARRECENT