Thursday , June 21 2018
Home / دنیا / ہند ۔ سری لنکا جامع اقتصادی سمجھوتہ کی تکمیل پر زور

ہند ۔ سری لنکا جامع اقتصادی سمجھوتہ کی تکمیل پر زور

کولمبو ۔ 14 مارچ۔(سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ ہندوستان پر عالمی اعتماد بحال ہوا ہے اور اس ملک کے ساتھ دنیا کی ساجھیداری ایک نئی سطح پر پہونچ گئی ہے ۔ انھوں نے سری لنکا کو تیقن دیا کہ باہمی تجارت میں پائے جانے والے بھاری تجارتی خسارہ پر اس کی تشویش کا مناسب ازالہ کیا جائے گا ۔ مسٹر مودی نے زور دیکر کہا کہ طویل عرصہ س

کولمبو ۔ 14 مارچ۔(سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ ہندوستان پر عالمی اعتماد بحال ہوا ہے اور اس ملک کے ساتھ دنیا کی ساجھیداری ایک نئی سطح پر پہونچ گئی ہے ۔ انھوں نے سری لنکا کو تیقن دیا کہ باہمی تجارت میں پائے جانے والے بھاری تجارتی خسارہ پر اس کی تشویش کا مناسب ازالہ کیا جائے گا ۔ مسٹر مودی نے زور دیکر کہا کہ طویل عرصہ سے زیرتصفیہ جامع اقتصادی ساجھیداری سمجھوتہ ( سی ای پی اے ) کی تکمیل کیلئے جراتمندانہ پیشرفت کی ضرورت ہے ۔ انھوں نے کہا کہ سری لنکا کے پاس اس علاقہ میں ہندوستان کے طاقتور ترین اقتصادی ساجھیدار بننے کی تمام تر صلاحیتیں موجود ہیں اور اس ( سری لنکا ) کو ہندوستان کی بڑی معیشت سے خوفزدہ نہیں ہونا چاہئے ۔ مسٹر مودی نے سیلون چیمبرس آف کامرس میں کل رات تجارتی برادری سے خطاب کے دوران باہمی تجارت میں بڑے پیمانے پر عدم توازن سے سری لنکا کو لاحق تشویش کا اعتراف کیا۔ مسٹر مودی نے جو 1987 ء کے بعد اس ملک کا دورہ کرنے والے پہلے ہندوستانی وزیراعظم بھی ہیں کہا کہ ’’ان مسائل کی یکسوئی کیلئے میں آپ کے ساتھ کام کرنے تیار ہوں ۔ میں تجارت میں متوازن ترقی چاہتا ہوں۔ ہندوستانی مارکٹ تک آپ کی رسائی کو ہم آسان بنائیں گے ‘‘۔ سری لنکا جنوبی ایشیاء میں ہندوستان کا ایک بڑا تجارتی ساجھیدار ہے ۔

2013-14 کے دوران ان دونوں ملکوں کے درمیان 5.23 ارب امریکی ڈالر رہی جس میں ہندوستانی برآمدات 3.98 ارب امریکی ڈالر اور سری لنکا کی برآمدات 678 ملین امریکی ڈالر رہی ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ گزشتہ سہ ماہی کے دوران ہندوستان ایک تیزی کے ساتھ ابھرنے والی عالمی معیشت قرار دیا گیا ۔ مجھے یقین ہے کہ ہم مزید تیز رفتار ترقی کریں گے۔ ہندوستان پر عالمی اعتماد بحال ہوا ہے ۔ ہندوستان کے ساتھ عالمی ساجھیداری و تجارت ایک نئی سطح پر پہونچ گئی ہے ۔ انھوں نے کہاکہ ’’میں اکثر کہتا رہا ہوں کہ کسی ملک کا مقدر اس کے پڑوسیوں سے مربوط ہوتا ہے ۔ ہندوستان میں ایسے کئی ہیں جو بحث کرتے ہیں کہ ہندوستان بہت بڑا ملک ہے اور اس کو پڑوسیوں کی کیا ضرورت ہے ‘‘۔ انھوں نے کہاکہ ’’ہمارے علاقہ میں کئی ایسے بھی ہیں جو ہندوستانی معیشت کے حجم ( سائز ) پر فکرمند ہیں اور سمجھتے ہیں کہ ہندوستان کی بڑی معیشت اُنھیں متاثر کرسکتی ہے لیکن میں ان دونوں نظریات سے اختلاف کرتا ہوں ۔ میرا ایقان ہے کہ ہمیں اپنی قومی ترقی پر توجہ مرکوز کرنے کیلئے ایک مستحکم اور پرامن پڑوسی کی ضرورت ہوتی ہے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT