Tuesday , September 25 2018
Home / کھیل کی خبریں / ہند ۔ ویسٹ انڈیز آج چوتھا ونڈے، دونوں ٹیمیں سبقت کیلئے کوشاں

ہند ۔ ویسٹ انڈیز آج چوتھا ونڈے، دونوں ٹیمیں سبقت کیلئے کوشاں

دھرم شالہ ۔ 16 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی ٹیم جس نے گذشتہ مقابلہ میں ڈرامائی انداز میں مقابلہ اپنے نام کرتے ہوئے سیریز کو 1-1 سے برابر کیا ہے، وہ کل یہاں دھرم شالہ کے ایچ پی سی اے اسٹیڈیم میں کھیلے جانے والے چوتھے ونڈے میں ایک اور کامیابی حاصل کرتے ہوئے ویسٹ انڈیز کے خلاف 2-1 کی ناقابل تسخیر سبقت حاصل کرنے کیلئے کوشاں ہیں۔ ایچ پی سی

دھرم شالہ ۔ 16 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی ٹیم جس نے گذشتہ مقابلہ میں ڈرامائی انداز میں مقابلہ اپنے نام کرتے ہوئے سیریز کو 1-1 سے برابر کیا ہے، وہ کل یہاں دھرم شالہ کے ایچ پی سی اے اسٹیڈیم میں کھیلے جانے والے چوتھے ونڈے میں ایک اور کامیابی حاصل کرتے ہوئے ویسٹ انڈیز کے خلاف 2-1 کی ناقابل تسخیر سبقت حاصل کرنے کیلئے کوشاں ہیں۔ ایچ پی سی اے اسٹیڈیم کی وکٹ سیریز کے 1-1 سے برابر ہوجانے کے بعد چوتھے مقابلے کیلئے ایک بہترین وکٹ تصور کی جارہی ہے جہاں فاسٹ بولروں کیلئے یہ مددگار ثابت ہوگی۔ علاوہ ازیں پہاڑی علاقہ میں کھیلے جانے والے اس مقابلہ کے دوران بارش کے امکانات بھی ہیں، لیکن بارش سے مقابلہ مکمل متاثر نہیں ہوگا لیکن کچھ وقفہ کیلئے اگر بارش ہوتی ہے تو یہ وکٹ بولروں کیلئے مزید سازگار ہوسکتی ہے۔

ویسٹ انڈیز اور ہندوستان دونوں ہی ٹیمیں 20 اکٹوبر کو کولکتہ میں سیریز کے پانچویں اور آخری مقابلہ کے انعقاد سے قبل یہاں کامیابی کے ذریعہ سبقت حاصل کرنے کیلئے کوشاں ہوگی۔ دہلی کے فیروزشاہ کوٹلہ میدان میں ہندوستانی ٹیم کی ڈرامائی کامیابی میں ویسٹ انڈیز کی خود اپنی ناقص بیٹنگ کا بھی کلیدی کردار رہا ہے جیساکہ ایک قابل تعاقب نشانہ کا پیچھا کرتے ہوئے ویسٹ انڈیز کی ٹیم کافی بہتر موقف میں تھی لیکن اچانک 263 رنز کے تعاقب میں ویسٹ انڈیز نے اپنی آخری 8 وکٹیں 45 رنز پر گنوا دی۔ فیروز شاہ کوٹلہ کے میدان پر اسپنرس کیلئے حالات سازگار نہیں تھے اور امید کی جارہی ہیکہ دھرم شالہ کے میدان پر بھی اسپنرس کیلئے حالات سازگار نہیں ہوں گے۔ جنوری 2013ء میں جب یہاں ہندوستانی ٹیم نے آخری مقابلہ انگلینڈ کے خلاف کھیلا تھا تو پہلے بیٹنگ کرنے والی ہندوستانی ٹیم نے صرف 79 رنز کے اضافہ پر ہی اپنے آدھے بیٹسمینوں کا نقصان برداشت کرچکی تھی۔ بعدازاں اسے مقابلہ میں بھی شکست ہوئی تھی۔ ہندوستان کیلئے گذشتہ مقابلہ میں ویراٹ کوہلی کا فام میں واپس آنا خوش آئند ہے جیسا کہ انہوں نے دہلی میں 62 رنز اسکور کئے تھے اور اس نصف سنچری کی بدولت کوہلی کے حوصلے یقیناً بلند ہوئے ہیں۔ گذشتہ مقابلہ میں کوہلی کو ان کے مستقل تیسرے مقام کی بجائے چوتھے مقام پر بیٹنگ کیلئے اس وقت روانہ کیا گیا تھا

جب نمبر 3 پر امباٹی رائیڈو نے بہتر ذمہ داری نبھاتے ہوئے ایک جانب ہندوستان کو ناقص شروعات سے باہر نکلنے میں مدد کی تو دوسری جانب نئی گیند سے ہونے والے نقصانات کو بھی بیٹسمینوں کیلئے کم کردیا تھا۔ وکٹ کے کیوریٹر سنیل چوہان نے کہا ہیکہ یہاں کے وکٹ فاسٹ بولروں کیلئے سازگار رہے گی اور دونوں ٹیموں کے کپتان اپنی صف بندی میں 4 فاسٹ بولروں کو شامل کرسکتے ہیں۔ ان حالات میں ممکن ہیکہ ہندوستانی ٹیم نے امیت مشرا کو شامل نہ کرتے ہوئے ان کے مقام پر فاسٹ بولر ایشانت شرما کو موقع دیا جاسکتا ہے۔ ایشانت شرما جس طرح کی بولنگ کرتے ہیں یہاں دھرمشالہ کی وکٹ ان کیلئے انتہائی سازگار ثابت ہوسکتی ہے۔ دوسری جانب ویسٹ انڈیز گذشتہ مقابلہ میں ہوئی شکست کا ازالہ کرتے ہوئے نہ صرف کامیابی کی خواہاں ہے بلکہ ٹیم میں ایک اور فاسٹ بولر کیمر روج کی شمولیت کا امکان بھی ہے کیونکہ وکٹ فاسٹ بولروں کیلئے سازگار بتائی جارہی ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT