Tuesday , January 23 2018
Home / اضلاع کی خبریں / ہنمکنڈہ سے مسلم امیدوار کو ٹکٹ دینے کا مطالبہ

ہنمکنڈہ سے مسلم امیدوار کو ٹکٹ دینے کا مطالبہ

ورنگل کے مسلم وفد کی وزیر جئے رام رمیش اور پنالہ لکشمیا سے نمائندگی

ورنگل کے مسلم وفد کی وزیر جئے رام رمیش اور پنالہ لکشمیا سے نمائندگی

قاضی پیٹ ۔ 21مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع ورنگل کے مسلم نوجوان بالخصوص دانشوروں ‘ سیاسی قائدین کا ایک بڑا وفد گاندھی بھون حیدرآباد پہنچ کر مرکزی وزیر جئے رام رمیش اور صدر پی سی سی پنالہ لکشمیا سے ملاقات کرتے ہوئے ایک یادداشت پیش کی جس میں مطالبہ کیا کہ مسلم آبادی والے حلقہ اسمبلی مغرب( ہنمکنڈہ ) ورنگل سے کانگریس پارٹی کی جانب سے جناب محمد اسمعیل شمسی سابق صدر وقف کمیٹی ورنگل کو کانگریس پارٹی کی جانب سے سال 2014ء عوامی انتخابات میں ٹکٹ فراہم کیا جائے ۔ ضلع ورنگل کے 1500 سے زائد مسلم نوجوان بالخصوص سیاسی قائدین نے گاندھی بھون کے احاطہ میں محمد اسمعیل شمسی کو ٹکٹ دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے ایک گھنٹہ سے زائد نعرے بازی کی ۔ بعد ازاں مرکزی وزیر جئے رام رمیش ‘ پی لکشمیا نے اسمعیل شمسی کو اس بات کا تیقن دیا کہ کانگریس پارٹی کے ہائی کمانڈ کے علم میں یہ بات رکھی جائے گی ۔ واضح رہے کہ حلقہ اسمبلی مغرب ہنمکنڈہ کا مسلم آبادی علاقہ کہلایا جاتا ہے جہاں پر اقلیتوں کے کافی ووٹس موجود ہیں ۔ اس سال مسلم رائے دہندوں میں نمایاں اضافہ ہوا ہے اور اقلیتوں کے جملہ 65,670 ووٹس ہیں ۔ یہاں رائے دہندوں کی مجموعی تعداد 1,73,000 ہے ۔ یہاں پر مسلمانوں کا فیصلہ کن موقف ہے ۔ کسی بھی پارٹی کی جانب سے مسلم امیدوار کو ٹکٹ دیئے جانے پر آسانی سے کامیابی حاصل کیا جاسکتا ہے ۔ ضلع ورنگل کے 12حلقہ اسمبلی ‘2پارلیمانی نشست ہیں جہاں پر کسی بھی مسلم امیدوار کو ٹکٹ نہیں دیا گیا ۔

یہاں پر کانگریس پارٹی کی جانب سے محمد اسمعیل کو ٹکٹ دیئے جانے کی صورت میں کانگریس پارٹی کو اقلیتوں کے کافی ووٹس حاصل ہوسکتے ہیں اور کانگریس پارٹی کو بھی شاندار کامیابی حاصل ہوسکتی ہے ۔ اسمعیل شمسی گذشتہ 15برسوں سے کانگریس پارٹی میں خدمات انجام دے رہے ہیں ۔ اب تک انہیں کوئی بھی نامزد عہدہ حاصل نہیں ہوا ‘ اس کے ساتھ ہی ساتھ دیگر پارٹیوں کی جانب سے بھی کسی بھی مسلم امیدوار کو لوک سبھا یا حلقہ اسمبلی سے مقابلہ کرنے کا موقع فراہم نہیں کیا گیا ۔ ہر سیاسی پارٹی مسلم قائدین کے ساتھ سوتیلا سلوک کررہی ہے ‘ صرف مسلمانوں کو ووٹوں کے حد تک محدود کردیا ہے ۔ جاگو مسلمانوں جاگو آگئی ہے امتحان کی گھڑی ‘ آپسی اختلافات کو نظر انداز کر کے سارے مسلمان ایک پلیٹ فارم پر آنے کی سخت ضرورت ہے اور ہر پارٹی کی جانب سے مسلم امیدوار کو ٹکٹ فراہم کئے جانے کیلئے متعلقہ پارٹیوں پر دباؤ ڈالنے کی سخت ضرورت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT