Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / ہوٹلوں اور ریسٹوران میں من مانی قیمتیں

ہوٹلوں اور ریسٹوران میں من مانی قیمتیں

غذائی اشیاء اور مشروبات پر اضافی رقم کی وصولی
حیدرآباد ۔ 11 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز ) : شہر کی اکثر و بیشتر بڑی بڑی ہوٹلس اور ریسٹورنٹس میں اشیاء متعینہ قیمتوں سے بڑھ کر فروخت کی جارہی ہیں اور جن اشیاء کی متعینہ قیمتیں 20 ، 25 روپئے ہوتی ہیں ان پر 15 ، 25 روپئے زائد وصول کئے جارہے ہیں اور جب کوئی شخص ان ہوٹلس یا ریسٹورنٹس میں کھانا تناول کرتے ہیں اور ساتھ میں سافٹ ڈرنکس ، پانی بوتل یا لسی ، بٹر ملک یا لمن سوڈا وغیرہ پیتے ہیں تو انہیں زائد قیمتوں پر مشتمل جملہ بل ہاتھ میں تھما دی جارہی ہے اور عوام اپنی مصروفیت یا قیمتوں سے متعلق استفسار کرنے کو عار سمجھتے ہوئے بلس کی ادائیگی کرتے ہوئے آگے بڑھتے جارہے ہیں ۔ بلکہ بعض ہوٹلس و ریسٹورنٹس میں 20 روپئے کی پانی کی بوتل 25 ۔ 32 روپئے کو 300ml کے سافٹ ڈرنکس یا 150ml کے سافٹ ڈرنکس پر 5 ۔ 15 روپئے زائد وصول کئے جارہے ہیں اور اگر کوئی فروخت کنندہ سے قیمت سے متعلق استفسار بھی کرتا ہے تو سافٹ ڈرنکس کو ٹھنڈا ( کولنگ ) کرنے کا بہانہ بنایا جارہا ہے اور اسی طرح بٹر ملک جو 100ml کی پاکٹ میں دستیاب ہے ۔ اس کی قیمت 10 ، 15 روپئے ہوتی ہے ۔ وہ بھی بعض بڑی بڑی ہوٹلس میں 10 ، 15 روپئے زائد قیمتوں پر فروخت کی جارہی ہیں ۔ علاوہ ازیں میٹھی لسی اور لمن جوس سوڈا وغیرہ پر بھی زائد بھاری قیمتیں وصول کی جارہی ہیں اور عوام جلد بازی میں قیمتیں ادا کررہے ہیں اگر عوام کا مالدار طبقہ اسی طرح بغیر سوچے سمجھے زائد قیمتیں ادا کرتا رہے گا تو اس سے اوسط اور غریب طبقات کو پریشانی اٹھانی پڑ سکتی ہے کیوں کہ یہ لوگ اپنی کسی ضرورت کی چیز زائد قیمتیں ادا کر کے خریدنے کے متحمل نہیں رہتے ہیں لہذا اس جانب مالدار طبقات کو توجہ دینے کی ضرورت ہے اگر یہ لوگ کسی غریب و اوسط شخص کی مدد نہیں کرسکتے ہیں تو کم از کم انہیں خریدی گئی اشیاء پر زائد قیمتیں ادا کر کے اوسط و غریب صارفین کو مشکلات میں مبتلا نہیں کرنا چاہتے تو دوسری جانب سرکاری اتھاریٹی جو قیمتوں پر کنٹرول کی ذمہ داری نبھاتی ہے اسے ہوش کے ناخن لینے کی اشد ضرورت ہے اگر اتھاریٹی وقتا فوقتا اچانک چھاپے مارتے ہوئے قیمتوں پر کنٹرول نہیں کرتی ہے تو یقینی طور پر شکوک و شبہات جنم لے سکتے ہیں کہ اتھاریٹی کا تاجرین کے ساتھ ساز باز چل رہا ہے لہذا اس اتھاریٹی کو چاہئے کہ فوری قیمتوں پر کنٹرول کو یقینی بناتے ہوئے کھلے عام لوٹ کھسوٹ پر پابندی عائد کرے ۔۔

TOPPOPULARRECENT