Saturday , September 22 2018
Home / Top Stories / یروشلم تنازعہ کے باوجود امریکی نائب صدر مائیک پنس کا دورۂ مشرق وسطیٰ

یروشلم تنازعہ کے باوجود امریکی نائب صدر مائیک پنس کا دورۂ مشرق وسطیٰ

واشنگٹن ۔ 20 جنوری ۔(سیاست ڈاٹ کام) امریکی نائب صدر مائیک پنس آج مشرق وسطیٰ کے دورہ پر ایک ایسے وقت پہنچ رہے ہیں جب ہر طرف یہ افواہیں اور بے چینی پائی جاتی ہے کہ امریکہ اپنا سفارت خانہ تل ابیب سے یروشلم منتقل کرنے والا ہے ۔ یاد رہے کہ مائیک پنس گزـشتہ سال ڈسمبر میں ہی مشرق وسطیٰ کا دورہ کرنے والے تھے تاہم صدر ٹرمپ کے یروشلم کو اسرائیل کادارالخلافہ بنانے کے فیصلہ کے بعد عالم عرب میں پائی جانے والی برہمی کو مدنظر رکھتے ہوئے دورہ کو ملتوی کیا گیا تھا تاہم اب صورتحال معمول پر واپس لوٹ رہی ہے اور احتجاج کا سلسلہ بھی تھم گیا ہے تاہم اس کے باوجود مائیک پنس کو یقین ہے کہ بعض مقامات پر اُن کااستقبال انتہائی سردمہری سے کیاجائے گا ۔ دوسری طرف امریکہ نے فلسطینیوں کے لئے اقوام متحدہ کی امدادی ایجنسی کو بھی فنڈس کی سربراہی روک دی ہے جس سے ہزاروں فلسطینیوں کو غذا ، تعلیم اور اُن کے علاج و معالجہ کیلئے مشکلات کاسامنا کرنا پڑسکتا ہے ۔ فلسطینی قیادت نے ماہ ڈسمبر میں مائیک پنس کے مجوزہ دورہ پر اُن سے ملاقات کرنے کے امکانات کو مسترد کردیاتھا ۔ پنس کی پریس سکریٹری علیسہ فرح نے بتایا کہ مسٹر پنس اس کے باوجود مصر ، اُردن اور اسرائیل کے قائدین سے ملاقات کریں گے حانلانکہ اُن کادورہ صرف چار روزہ ہے لیکن اُن کی کوششیں ہوگی کہ تمام قائدین سے ملاقات کی جائے اور حالات کی سنگینی کا اندازہ لگایا جائے ۔ مائیک پنس آج قاہرہ پہنچیں گے جہاں وہ صدر عبدالفتاح السیسی سے ملاقات کے بعد عمان روانہ ہوں گے اور شاہ عبداﷲ دوم سے ملاقات کریں گے ۔ البتہ یہ بات بعید از قیاس نہیں ہے کہ اسرائیل میں مائیکل پنس کا والہانہ استقبال کیا جاسکتا ہے کیونکہ ٹرمپ نے یروشلم کو اسرائیل کا دارالخلافہ قرار دینے کا جو اعلان کیا تھا اُس کے بعد اسرائیل میں جشن منایا گیا تھا ۔ پیر کے روز اسرائیل پہنچنے کے بعد مائیک پنس وزیراعظم بنجامن نتن یاہو اور صدر ریووین ریولین سے ملاقات کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT