Monday , November 20 2017
Home / اضلاع کی خبریں / یلاریڈی میں قلت آب کا مسئلہ سنگین، ذخائر آب خشک

یلاریڈی میں قلت آب کا مسئلہ سنگین، ذخائر آب خشک

گرام پنچایتوں کے ذمہ داران بے بس، عوام کو مشکلات، رکن اسمبلی کی توجہ ضروری
یلاریڈی /20 دسمبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مستقر یلاریڈی کے عوام کو پینے کا پانی سربراہ کرنے والا بڑا تالاب خالی ہو چکا ہے اور اب فلٹر کے بغیر بورویل کا پانی سربراہ کیا جا رہا ہے، جس کی وجہ سے عوام کی صحت کے لئے خطرہ لاحق ہو گیا ہے۔ واضح رہے کہ عرصہ دراز سے یلاریڈی فلٹر بیڈ ریت سے محروم ہے، اس میں سے خراب ریت چند ماہ قبل نکال دی گئی، تاکہ اس میں نئی ریت ڈال کر عوام کو شفاف پانی سربراہ کیا جاسکے، مگر نئی ریت ڈالنے کا کام مقامی گرام پنچایت کے ذمہ داروں نے اپنے ہاتھ میں لے لیا اور اب یہ مسئلہ یلا ریڈی رکن اسمبلی رویندر ریڈی کے حصہ میں چلا گیا۔ فلٹر بیڈ کے لئے تقریباً 20 لاکھ روپئے کی ریت کی ضرورت ہے، تاہم یلاریڈی کے عوام آج تک رکن اسمبلی سے اس مسئلہ کو حل نہیں کرواسکے۔ پینے کے پانی اور مستقر کی سڑکوں کی خستہ حالت کے سبب عوام میں شدید برہمی پائی جاتی ہے۔ یلاریڈی مستقر کے تقریباً 30 ہزار عوام کے لئے گرام پنچایت احاطہ میں ایک لاکھ 20 ہزار لیٹر کے حامل واٹر ٹینک کے ساتھ ساتھ 80 ہزار اور 60 ہزار لیٹر کے حامل سات واٹر ٹینک بنوائے گئے، جس میں بڑا تالاب کے پانی کو فلٹر کرکے ان میں منتقل کیا جاتا اور پھر تین ہزار سے زائد نلوں کے ذریعہ عوام کو پینے کا پانی سربراہ کیا جاتا ہے۔ اس کے ساتھ مستقر پر مختلف علاقوں میں 34 راست پمپنگ کے بورویلز عوامی ضروریات کو پورا کر رہے ہیں۔ گزشتہ دو سال سے منڈل میں غیر اطمینان بخش بارش ہونے سے پانی کی قلت ہے، جس سے بڑے تالاب کی آبی سطح میں بھی کمی واقع ہوئی، پھر بھی تالاب میں موجود پانی محفوظ کرکے سربراہ کرنے گرام پنچایت کے ذمہ دار تیار تھے، لیکن کئی سال سے فلٹر بیڈ کی ریت تبدیل نہ کرنے کے باعث گندگی پیدا ہو گئی تھی اور عوام کی شکایت پر گرام پنچایت نے اسے خالی کروایا اور نئی ریت ڈالنے کا بجٹ نہ ہونے پر اس کام کو رکن اسمبلی پر چھوڑ دیا، تاہم رکن اسمبلی اس طرح کا رویہ اختیار کئے ہوئے ہیں کہ انھیں یلاریڈی کے عوام یاد ہی نہیں رہے۔ اگر انھیں یہاں کے عوام یاد رہتے تو 18، 20 لاکھ روپئے فلٹر بیڈ کی ریت کے لئے منظور کرواکر عوام کا یہ مسئلہ حل کروادیتے۔ یلا ریڈی کے عوام کا کہنا ہے کہ یہاں کے عوام کے بنیادی مسائل کوئی حل کرنے والا نہیں ہے۔ فی الوقت تالاب میں ڈالے گئے بورویلز سے پینے کا پانی سربراہ کیا جا رہا ہے، جب کہ عوام اس پانی کو پینے کے لئے تیار نہیں ہیں اور وہ اپنی پیاس بجھانے کے لئے منرل واٹر خریدنے پر مجبور ہیں۔ صرف غریب عوام بنا فلٹر والا پانی پینے پر مجبور ہیں، جس سے مختلف بیماریوں میں مبتلا ہونے کا اندیشہ ہے۔ علاوہ ازیں مستقر کے کچھ علاقوں میں بورویلز بھی خشک یا پھر خراب ہو چکے ہیں، جس کی وجہ سے عوام راتوں میں دور دراز علاقوں سے پانی حاصل کرنے کے لئے چکر لگا رہے ہیں۔ عوام نے رکن اسمبلی رویندر ریڈی سے خواہش کی ہے کہ وہ عوام کی بنیادی سہولتوں کی جانب توجہ دیں، کیونکہ عوام نے انھیں اپنے مسائل حل کرنے کے لئے کامیاب بنایا تھا۔ اگر وہ عوام کی تکالیف دور نہیں کرسکتے تو ان کی کامیابی عوام کے لئے بے فیض ثابت ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT