Sunday , November 19 2017
Home / عرب دنیا / یمن : باغی سابق صدر کی دولت 25 ارب ڈالر سے متجاوز

یمن : باغی سابق صدر کی دولت 25 ارب ڈالر سے متجاوز

صنعاء ۔6 اگسٹ ۔(سیاست ڈاٹ کام) یمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح کے اثاثوں کے بارے میں متضاد اطلاعات سامنے آتی رہی ہیں۔ یمن کے ایک اقتصادی تجزیہ نگارنے دعویٰ کیا ہے کہ سنہ 1978ء￿  سے 2011ء تک منصب اقتدار پر فائز رہنے والے سابق صدر علی عبداللہ صالح کی کل دولت 25 ارب ڈالر سے زاید ہے۔یمنی تجزیہ نگار ڈاکٹر عبدالکریم العواضی نے سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ’فیس بک‘ پر پوسٹ ایک بیان میں سابق صدر کے بیٹے کے اس بیان کو مسترد کردیا جس میں اس کا کہنا تھا کہ ہمارے والد بزرگوار کی اصل دولت وہ کامیابیاں ہیں جو انہوں نے قوم کی خاطر حاصل کیں۔’العربیہ‘  کے مطابق ڈاکٹرعبدالکریم کا کہنا ہے کہ سابق صدر علی عبداللہ صالح کے اندرون اور بیرون ملک اثاثوں کا اندازہ لگانا مشکل ہے۔ وہ اپنے تیس سالہ دور اقتدار کے دوران قومی خزانے پر سانپ بنے رہے ہیں۔ جب سے یمن میں لڑائی شروع ہوئی ہے وہ مسلسل باغیوں کو اسلحہ فروخت کیے جا رہے ہیں۔ اس اسلحے سے حاصل ہونے والی کروڑوں ڈالر کی آمدنی بھی سابق صدر علی عبداللہ صالح کی جیب میں جاتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT