Wednesday , June 20 2018
Home / عرب دنیا / یمن :بندوق برداروں کے ہاتھوں 14 یمنی فوجی و شہری ہلاک

یمن :بندوق برداروں کے ہاتھوں 14 یمنی فوجی و شہری ہلاک

عدن 5 جون (سیاست ڈاٹ کام) القاعدہ کے مشتبہ بندوق برداروں نے 14 یمنی فوجیوں اور ایک شہری کو جنوبی صوبہ میں ہلاک کردیا جہاں فوجی اپریل کے اواخر سے جہادیوں سے برسر پیکار ہیں۔ عسکریت پسندوں نے صوبہ شبوا کے دیہات دیہان کے قریب ایک چوکی پر خودکار رائفلوں سے حملہ کیا جس میں کئی فوجی زخمی بھی ہوگئے۔ یہ حملہ ڈرون حملہ کے چند گھنٹوں بعد کیا گیا

عدن 5 جون (سیاست ڈاٹ کام) القاعدہ کے مشتبہ بندوق برداروں نے 14 یمنی فوجیوں اور ایک شہری کو جنوبی صوبہ میں ہلاک کردیا جہاں فوجی اپریل کے اواخر سے جہادیوں سے برسر پیکار ہیں۔ عسکریت پسندوں نے صوبہ شبوا کے دیہات دیہان کے قریب ایک چوکی پر خودکار رائفلوں سے حملہ کیا جس میں کئی فوجی زخمی بھی ہوگئے۔ یہ حملہ ڈرون حملہ کے چند گھنٹوں بعد کیا گیا جس میں القاعدہ کے 3 مشتبہ عسکریت پسند جو ایک گاڑی میں وادیٔ عابدہ سے گزر رہے تھے، ہلاک ہوگئے تھے۔ اِس علاقہ میں صرف امریکہ ڈرون طیارے چلاتا ہے۔ ڈرون پروگرام کا دفاع امریکہ اور صدر یمن نے انسانی حقوق گروپس کے شہریوں کی ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ کے خلاف کیا ہے۔ حملوں کی لہر میں تقریباً 60 مشتبہ جہادی ہلاک کردیئے گئے۔ القاعدہ نے 2011 ء میں مرکزی حکومت کی ناکامی سے فائدہ اُٹھاکر بغاوت کردی تھی۔ جس کی وجہ سے کئی نامور افراد اقتدار سے بیدخل کردیئے گئے تھے

جن میں سابق صدر یمن علی عبداللہ صالح بھی شامل ہیں۔ جہادی حضرموت صوبہ میں اکثریت میں ہیں۔ اُنھوں نے حالیہ مہینوں میں کئی زبردست حملے کئے ہیں۔ صنعا سے موصولہ اطلاع کے بموجب حکومت یمن نے دعویٰ کیا ہے کہ گزشتہ 5 ہفتے کی فوجی جارحیت کے دوران کم از کم 500 القاعدہ عسکریت پسند ہلاک کردیئے گئے ہیں۔ ملک کے جنوبی علاقہ میں جو عسکریت پسندوں کا مستحکم گڑھ ہے، 29 اپریل سے فوج نے جارحانہ کارروائی شروع کر رکھی ہے۔ فوج کے ترجمان کرنل سعید الفقیہہ نے ایک پریس کانفرنس میں کہاکہ اِس کارروائی کے دوران صوبوں شبوا اور ابیان میں 40 فوجی ہلاک اور دیگر 100 زخمی بھی ہوچکے ہیں۔ 39 عسکریت پسندوں کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ ہم القاعدہ کے خلاف جنگ پر زور دے رہے ہیں۔ خاص طور پر اِن علاقوں میں جہاں القاعدہ کے عسکریت پسند موجود ہیں۔

TOPPOPULARRECENT