Tuesday , December 12 2017
Home / Top Stories / یمن پر سعودی فضائی حملوں میں 20 ہندوستانی ہلاک

یمن پر سعودی فضائی حملوں میں 20 ہندوستانی ہلاک

اتحادی افواج میں قطر اور سوڈان کی شمولیت ،اطلاعات کی توثیق کیلئے وزارت خارجہ ہند کوشاں
دبئی ۔ 8 ۔ ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) سعودی زیر قیادت مخلوط اتحاد کے فضائی حملوں میں جو یمن کے ساحلی شہر میں ایندھن کے اسمگلر پر کئے گئے تھے، کم از کم 20 ہندوستانی ہلاک ہوگئے۔ ماہی گیروں کے بموجب مزید غیر ملکی فوجیوں کی آمد سے حوثی افواج کے خلاف مہم میں شدت پیدا ہوگئی۔ حوثی سرکاری خبر رساں ادارہ سبا نے بھی کہا کہ 15 شہری صنعاء پر فضائی حملوں میں ہلاک ہو گئے۔ طبی ذرائع کے بموجب 15 شہری اسی قسم کے حملوں میں پیر کے دن بھی ہلاک ہوئے تھے۔ آزادانہ طور پر ان اعداد و شمار کی توثیق نہیں ہوسکی۔ مخلوط اتحاد میں کئی عرب ممالک شامل ہیں، جن میں سعودی عرب ، بحرین اور متحدہ عرب امارات کے فوجی صنعاء کے مشرق میں فوجی کیمپ میں تعینات ہیں۔

یہ تمام ایک فوج میں شامل ہیں جو دارالحکومت پر حملہ کی تیاری کر رہی ہے ۔ جمعہ کے دن کا حملہ مہلک ترین تھا۔ خلیجی فوجیوں نے اسے سعودی زیر قیادت ممالک کیلئے جنگ کا ایک نیا موڑ قرار دیا۔ زمینی جنگ سے تاحال گریز کیا گیا ہے ۔ مغربی یمن میں مقامی شہریوں اور ماہی گیروں کا کہناہے کہ سعودی زیر قیادت اتحادکے طیاروں نے الخوخھا میں دو کشتیوں پر حملہ کردیا۔ یہ کشتیاں ہندوستانی استعمال کیا کرتے تھے اور ملک کیلئے شدید ضروری ایندھن اسمگل کرتے تھے۔ مبینہ طور پر اس حملہ میں 20 افراد ہلاک ہوگئے۔ فوری طور پر سرکاری عہدیدار اس خبر کی توثیق کیلئے دستیاب نہیں ہوسکے۔ قطرکی ملکیت الجزیرہ ٹی وی نے اطلاع دی ہے کہ اتحادی فوجیوںکی تعداد 10,000 ہوگئی ہے ۔ یمن کے فوجی عہدیدار نے غیر ملکی فوجیوں کی منگل کے دن آمد کی تردید کردی اور کہا کہ اس کے  خیال میں الجزیرہ نے غیر ملکی فوجیوں کی تعداد مبالغہ آرائی کے ساتھ پیش کی ہے ۔ الجزیرہ نے پیر کے دن کہا تھا کہ قطر کے ایک ہزار فوجی الوادیہ سرحد پار کرچکے ہیں اور قطری فوجی سعودی عرب کے راستہ سے یمن میں داخل ہوچکے ہیں۔ قطر کی فوج سے قربت رکھنے والے ایک ذریعہ نے خبر کی توثیق کردی ۔ صنعاء میں اس کارروائی کیلئے شدت سے بمباری ، فضائی طاقت اور زمینی جارحانہ کارروائی استعمال کی گئی۔ قطر اور مخلوط اتحاد کے عہدیدار تبصرہ کیلئے فوری طور پر دستیاب نہیں ہوسکے۔ مصری عہدیداروں نے کہا کہ مصری فوجی بھی منگل کے دن یمن پہنچ چکے ہیں لیکن فوجیوں کی تعداد ظاہر نہیں کی گئی۔

سعودی روزنامہ عربیہ نے ذرائع کے حوالہ سے کہا کہ سوڈان کے 8,000 فوجی جلد ہی اتحادی فوج میں شامل ہوجائیں گے لیکن سوڈان کی حکومت نے اس خبر پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔ ریاض میں یمن کی جلا وطن حکومت کے ایک خبر رساں ادارہ نے کہا کہ 10,000 وفادار فوجی صنعاء پر حملہ کرنے کی تیاری کر رہے ہیں۔ یمن کے صدر عبدالرب منصور ہادی مارچ میں فرار ہوکر ریاض پہنچ گئے تھے جس کی وجہ سے سعودی زیر قیادت دخل اندازی اور جنگ ناگزیر ہوگئی تھی جس میں 4500 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جن میں سے بیشتر شہری تھی۔ یمن اور خلیجی فوجی عدن پر دوبارہ قابض ہوگئے ہیں ، جس پر حوثی باغیوں نے قبضہ کرلیا تھا۔ سعودی عرب زیر قیادت اتحاد کا خیال ہے کہ حوثی باغی ایران کے زیر اثر جنگ کر رہے ہیں لیکن اس کی حوثی باغیوں اور ایران دونوں کی جانب سے تردید کی گئی ہے۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاعات کے بموجب وزارت خارجہ نے آج کہا کہ اسے 20 ہندوستانیوںکی یمن پر سعودی زیر قیادت فضائی حملوں میں ہلاک ہونے کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ تاہم وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سوروپ نے کہا کہ ان خبروں کی توثیق کی کوشش کی جارہی ہے۔ ذرائع ابلاغ کی بعض اطلاعات کے بموجب 20 ہندوستانی شہری سعودی زیر قیادت اتحاد کے ایندھن کے اسمگلروں پر فضائی حملوں سے ساحلی شہر حدیدہ میں ہلاک ہوگئے ہیں۔ یمن میں ہندوستان کا سفارتخانہ نہیں ہے ۔ اسے اپریل میں بند کردیا گیا تھا اور ارکان عملہ کا تخلیہ کروادیا گیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT