Tuesday , December 11 2018

یمن کے تشدد میں 944 ہلاک، 3487 زخمی

جنیوا ۔ 21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) یمن میں گذشتہ مارچ سے تشدد عروج پر ہے جس میں 17 اپریل تک 944 افراد ہلاک اور 3487 زخمی ہوچکے ہیں۔ اقوام متحدہ کی عالمی صحت تنظیم نے کہا کہ یہ اعداد و شمار یمن کے دواخانوں سے حاصل کئے گئے ہیں لیکن حقیقی تعداد امکان ہیکہ اس سے کہیں زیادہ ہوگی کیونکہ کئی افراد علاج کیلئے دواخانہ تک نہیں پہنچ سکے۔ گذشتہ جمعہ کو عا

جنیوا ۔ 21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) یمن میں گذشتہ مارچ سے تشدد عروج پر ہے جس میں 17 اپریل تک 944 افراد ہلاک اور 3487 زخمی ہوچکے ہیں۔ اقوام متحدہ کی عالمی صحت تنظیم نے کہا کہ یہ اعداد و شمار یمن کے دواخانوں سے حاصل کئے گئے ہیں لیکن حقیقی تعداد امکان ہیکہ اس سے کہیں زیادہ ہوگی کیونکہ کئی افراد علاج کیلئے دواخانہ تک نہیں پہنچ سکے۔ گذشتہ جمعہ کو عالمی تنظیم صحت نے ہلاکتوں کی تعداد 767 اور زخمیوں کی تعداد 2906 ظاہر کی تھی۔ تشدد کا تازہ دور 19 مارچ سے شروع ہوا۔ عالمی تنظیم صحت نے ہلاکتوں کی جو تعداد بتائی ہے، اس میں شہریوں اور جنگجوؤں کی تعداد علحدہ علحدہ ظاہر نہیں کی گئی ہے۔ یمن دفاعی اعتبار سے کلیدی جہاز رانی کی رہگذاروں پر واقع ہے۔ یہ تیل کی دولت سے مالامال سعودی عرب کا پڑوسی ملک ہے، جس نے گذشتہ سال سے سیاسی انتشار پیدا ہوگیا جبکہ ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں نے دارالحکومت صنعا پر قبضہ کرلیا۔ سعودی عرب کی زیرقیادت خلیجی عرب ممالک کی اتحادی افواج نے گذشتہ ماہ باغیوں پر فضائی حملوں کا آغاز کیا۔ انہوں نے عہد کیا ہیکہ سابق صدر عبدالرب منصور ہادی کے اقتدار کا احیاء کریں گے جو یمن سے فرار ہوکر سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض پہنچ گئے ہیں کیونکہ جنوبی شہر عدن کی سمت باغیوں کی پیشرفت جاری ہے۔ آج یمن کے دواخانوں کی اطلاع کے بموجب 38 شہری ہلاک کئے گئے اور 532 زخمی ہوئے جبکہ اتحادی افواج نے یمن کے دارالحکومت میں میزائیل کے ایک ذخیرہ پر فضائی حملہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT