Saturday , June 23 2018
Home / عرب دنیا / یمن کے جنوبی علاقوں میں القاعدہ کا کنٹرول مضبوط

یمن کے جنوبی علاقوں میں القاعدہ کا کنٹرول مضبوط

صنعا ، 16 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) یمن میں القاعدہ کے جنگجوؤں نے چہارشنبہ اور جمعرات کی شب جنوبی گورنری ایب کے شہر العدین کا کنٹرول حاصل کر لیا۔ اس سے قبل چہارشنبہ کو القاعدہ کے جنگجوؤں کا وسطی یمن کے علاقے میں شیعہ مسلک حوثی باغیوں سے تصادم ہوا۔ سکیورٹی حکام کے مطابق اس تصادم کے نتیجے میں 12 افراد ہلاک ہوئے۔ اطلاعات کے مطابق القاعدہ کے

صنعا ، 16 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) یمن میں القاعدہ کے جنگجوؤں نے چہارشنبہ اور جمعرات کی شب جنوبی گورنری ایب کے شہر العدین کا کنٹرول حاصل کر لیا۔ اس سے قبل چہارشنبہ کو القاعدہ کے جنگجوؤں کا وسطی یمن کے علاقے میں شیعہ مسلک حوثی باغیوں سے تصادم ہوا۔ سکیورٹی حکام کے مطابق اس تصادم کے نتیجے میں 12 افراد ہلاک ہوئے۔ اطلاعات کے مطابق القاعدہ کے جنگجوؤں نے صنعا کے جنوبی مشرقی صوبہ البیضاء کے شہر رادع سے ابھرنے والے باغیوں کو للکارا ہے۔ یہ باغی تیزی سے ملک کے مختلف حصوں کا کنٹرول حاصل کرتے جا رہے ہیں۔ انصاراللہ کے نام سے معروف باغیوں نے منگل کو اپنا تسلط بحیرہ احمر کے ساحلوں تک پھیلا لیا۔ ملک کو درپیش بحران کے حل کی کوششوں کے ضمن میں نئے یمنی وزیر اعظم کی نامزدگی کے فوری بعد ہی باغیوں نے بحیرہ احمر کی اہم بندرگارہی شہر الحدیدہ کا کنڑول سنبھال لیا تھا۔

حکومت اور سنی جنگجوؤں کے خلاف برسرپیکار باغی ملک کے جنوبی علاقوں میں واقع اپنے ٹھکانوں سے کارروائیاں کرتے ہیں۔ ان کارروائیوں میں انہیں بہت زیادہ کامیابی ملی ہے۔ جزیرہ نما عرب میں سرگرم القاعدہ کی یمنی شاخ ہے، اسے امریکہ انتہائی خطرناک گروپ قرار دے چکا ہے اور حالیہ چند دنوں کے دوران تنظیم کے متعدد رہنماؤں کو امریکی ڈرون حملوں سے نشانہ بنایا گیا ہے۔ القاعدہ، ملک کی سنی مسلک اکثریت کو شیعہ مسلک اقلیت کے حملوں اور بغاوت سے تحفظ دلانا چاہتی ہے۔ اس مقصد کیلئے تنظیم ملک کے جنوب اور مشرقی علاقوں میں سکیورٹی اہلکاروں کو بھی نشانہ بنانے سے نہیں چوکتی۔ 2012ء میں علی عبداللہ صالح جیسے مرد آہن کا تختہ الٹے جانے کے بعد سے غربت کے مارے یمن میں سیاسی عدم استحکام کا دور دورہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT