Monday , June 25 2018
Home / عرب دنیا / یمن :گیس ٹرمنل پر قبائیلیوں کا قبضہ، اقوام متحدہ سے سعودی کی امداد طلبی

یمن :گیس ٹرمنل پر قبائیلیوں کا قبضہ، اقوام متحدہ سے سعودی کی امداد طلبی

عدن 14 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) مسلح قبائیلیوں نے یمن کے واحد گیس برآمدی ٹرمنل پر آج قبضہ کرلیا۔ جبکہ فوجیوں کو ہتھیار ڈال دینے والوں کی حفاظت کی ذمہ داری دی گئی ہے۔ یمن کی سرکاری فوج کے ایک ذریعہ کے بموجب قبائیلیوں نے فیصلہ کیا ہے کہ بلہاف پلانٹ کی حفاظت کا اپنے طور پر انتظام کریں گے۔ اِس پلانٹ کا انتظام یمن ایل این جی کے تحت ہے جس میں

عدن 14 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) مسلح قبائیلیوں نے یمن کے واحد گیس برآمدی ٹرمنل پر آج قبضہ کرلیا۔ جبکہ فوجیوں کو ہتھیار ڈال دینے والوں کی حفاظت کی ذمہ داری دی گئی ہے۔ یمن کی سرکاری فوج کے ایک ذریعہ کے بموجب قبائیلیوں نے فیصلہ کیا ہے کہ بلہاف پلانٹ کی حفاظت کا اپنے طور پر انتظام کریں گے۔ اِس پلانٹ کا انتظام یمن ایل این جی کے تحت ہے جس میں فرانس کے تقریباً 40 فیصد حصص موجود ہیں جو فی الحال داؤ پر لگے ہوئے ہیں۔ یمن کی ایل این جی نے کہاکہ اُس نے خلیج عدن کے ٹرمنل میں اپنی کارروائیاں بند کردی ہیں۔ یہ ٹرمنل یمن کے جنوبی صوبہ شبوا میں واقع ہے۔ ایل این جی نے کہاکہ فوجی کارروائیوں کے پیش نظر اُس نے اپنی کارروائیاں بند کردی ہیں۔ جنوبی یمن کے قبائیلیوں نے باغیوں کے خلاف شمالی یمن میں پیشرفت جاری رکھی ہے جبکہ اُس کا مقابلہ صدر عبدالرب کی وفادار فوج سے بھی ہے جو سعودی عرب فرار ہوچکے ہیں۔ اقوام متحدہ سے موصولہ اطلاع کے بموجب سلامتی کونسل میں آج ایک مسودہ قرارداد پر رائے دہی ہوگی جس میں مطالبہ کیا ہے کہ یمن کے باغیوں کو پسپائی اختیار کرلینا چاہئے اور اُن کو اسلحہ کی سربراہی پر امتناع عائد کیا جائے گا۔ اِس اقدام سے اردن

اور خلیجی ممالک پر پابندی عائد ہوجائے گی کہ وہ باغیوں کو اسلحہ سربراہ نہ کریں۔ تاہم اِس قرارداد کو روس ویٹو کرسکتا ہے جس کے ایران کے ساتھ خوشگوار تعلقات ہیں اور ایران باغیوں کی مدد کررہا ہے۔ عدن سے موصولہ اطلاع کے بموجب سعودی زیرقیادت اتحاد نے جو یمن پر فضائی حملے کررہا ہے، اقوام متحدہ سے خواہش کی ہیکہ باغیوں سے پسپائی کا مطالبہ کیا جائے اور ان کے قائدین پر تحدیدات عائد کردی جائیں کہ وہ اسلحہ حاصل نہیں کرسکتے۔ سلامتی کونسل کی قرارداد کے مسودہ میں جو اردن اور خلیجی ممالک نے پیش کیا تھا، امکان ہیکہ ویٹو کی طاقت رکھنے والے روس کی جانب سے اسے مسترد کردیا جائے گا۔ دریں اثناء غربت زدہ ملک میں انسانی بحران پیدا ہونے کے اندیشوں میں اضافہ ہوگیا ہے کیونکہ پورا ملک تشدد اور انتشار کی گرفت میں ہے۔ مقامی عہدیدار کے بموجب بالہاف اور گیس پائپ لائن کی حفاظت پر مامور صوبہ شبوا کے دارالحکومت عتق میں تعینات فوجی بریگیڈ کے 15 فوجیوں کی نعشیں دستیاب ہوئی ہیں۔ یہ واضح نہیں ہوسکا کہ انہیں کس نے ہلاک کیا ہے۔ اقوام متحدہ کی قرارداد کا مسودہ پہلا اقدام ہے جو سعودی زیرقیادت بمباری کے آغاز کے بعد اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں رائے دہی کیلئے پیش کیا جائے گا۔ اس قرارداد سے باغیوں کے قائد عبدالملک اور سابق صدر علی عبداللہ صالح کے بڑے فرزند احمد پر تحدیدات کا امکان ہے۔

TOPPOPULARRECENT