Friday , December 15 2017
Home / دنیا / یورپ آنے والے غیر ملکیوں کیلئے نیا ’انٹری ایگزٹ سسٹم‘ منظور

یورپ آنے والے غیر ملکیوں کیلئے نیا ’انٹری ایگزٹ سسٹم‘ منظور

پراگ ۔ 26 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) یورپی یونین میں سلامتی کی صورت حال میں بہتری کے لیے اس بلاک کی سرحدوں پر جلد ہی امریکہ اور یونین سے باہر کے دیگر ممالک کے شہریوں کے فنگر پرنٹس لیے جایا کریں گے۔ چند حلقے اس اقدام کو انسانی حقوق پر حملہ قرار دے رہے ہیں۔یورپی یونین کے اس اقدام کے تحت اس اب تک اٹھائیس رکنی بلاک میں یونین سے باہر کے امریکہ سمیت تمام ممالک سے آنے والے مسافروں کے نہ صرف فنگر پرنٹس لیے جائیں گے بلکہ ساتھ ہی ان غیر ملکیوں کے بائیو میٹرک ڈیٹا پر مشتمل ایک پورا ڈیٹا بینک بھی تیار کیا جائے گا۔امریکہ میں ہوائی اڈوں اور بندرگاہوں پر ایسا سکیورٹی سسٹم پہلے ہی سے کام کر رہا ہے۔ اب یورپی یونین نے بھی اپنے ہاں اس بلاک کے باہر سے آنے والے غیر یورپی شہریوں کے لیے یہ نظام متعارف کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔یورپی حکام اس تبدیلی کی وجہ یہ سوچ بتاتے ہیں کہ یونین میں سلامتی کی صورت حال مزید بہتر بنائی جانا چاہیے۔ لیکن اس فیصلے پر ناخوش کئی سماجی حلقوں کا یہ دعویٰ بھی ہے کہ اس طرح بنیادی انسانی حقوق پر حملہ کیا جا رہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT