Saturday , September 22 2018
Home / دنیا / یورپ کے اصل سماجی دھارے میں مسلمانوں کی یکجہتی ضروری

یورپ کے اصل سماجی دھارے میں مسلمانوں کی یکجہتی ضروری

واشنگٹن۔17 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے صدر بارک اوباما نے کہا کہ یورپ کو چاہئے کہ وہ امریکہ کی تقلید کرتے ہوئے سماج کے اصل دھارے میں مسلمانوں کی شمولیت و یکجہتی کو یقینی بنائیں کیونکہ اس (مسلم) طبقہ کی اکثریت ’’رواداری‘‘ پر یقین رکھتی ہے۔ صدر اوباما نے کہا کہ ’’ہماری مسلم آبادیاں ہمارا سب سے بڑا فائدہ ہیں جو خود کو امریکی سمجھ

واشنگٹن۔17 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے صدر بارک اوباما نے کہا کہ یورپ کو چاہئے کہ وہ امریکہ کی تقلید کرتے ہوئے سماج کے اصل دھارے میں مسلمانوں کی شمولیت و یکجہتی کو یقینی بنائیں کیونکہ اس (مسلم) طبقہ کی اکثریت ’’رواداری‘‘ پر یقین رکھتی ہے۔ صدر اوباما نے کہا کہ ’’ہماری مسلم آبادیاں ہمارا سب سے بڑا فائدہ ہیں جو خود کو امریکی سمجھتی ہیں اور یہ ہمارے ایمیگریشن اور شمولیت کا بے مثال عمل ہے جو ہماری روایات کا ایک حصہ بھی ہے اور غالباً یہ ہماری ایک عظیم طاقت بھی ہے‘‘۔ صدر اوباما نے کہا کہ ’’اس کا مطلب ہرگز یہ نہیں ہے کہ ہمیں ایسے سانحوں سے نہیں گذرنا پڑا جس طرح ہوسٹن مراتھن سانحہ سے گذرے ہیں، لیکن عمومی طور پر میں سمجھتا ہوں کہ مسلمانوں کو اصل دھارے میں شمولیت فائدہ مند ہے‘‘۔

صدر اوباما نے مزید کہا کہ یورپ میں چند ایسے حصے بھی ہیں جہاں کی صورتِ حال مختلف ہے اور غالباً یہی وجہ ہے کہ یہ براعظم (یورپ) ’’سنگین خطرات‘‘ کا سامنا کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یورپ کے لئے یہ نہایت اہم ہے کہ وہ اس قسم کے مسائل کو محض طاقت، قانون کے نفاذ اور فوج کے ذریعہ ہی حل کرنے کی کوشش نہ کرے۔ امریکہ کے صدر نے کہا کہ مسلمانوں کی اکثریت ’’رواداری‘‘ پر یقین رکھتی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ (دہشت گردی) ایک ایسا مسئلہ ہے جو شدید دل شکنی، المیہ، تباہی و بربادی کا سبب ہے لیکن ہم اس کو یقیناً شکست دیں گے، لیکن صرف اسلحہ کے ذریعہ ہم اس (دہشت گردی) کو شکست نہیں دے سکتے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT