Monday , June 18 2018
Home / شہر کی خبریں / یونس بن عمر یافعی کے بھائی اور دو فرزندوں کی ضمانت منظور

یونس بن عمر یافعی کے بھائی اور دو فرزندوں کی ضمانت منظور

مرحوم کی آج رات تدفین میں شرکت کیلئے رہائی ، ہائی کورٹ کے عبوری احکام
حیدرآباد ۔ /21 فبروری (سیاست نیوز) حیدرآباد ہائیکورٹ نے آج یونس بن عمر یافعی کی تدفین میں شرکت کیلئے ان کے بھائی اور دو فرزندان کی 15 دن کی عبوری ضمانت منظور کی ہے ۔ حسن بن عمر یافعی ، عبداللہ بن یونس یافعی اور عود بن یونس یافعی کی جانب سے آج صبح ہائیکورٹ میں عبوری ضمانت کیلئے درخواست داخل کی گئی تھی جس میں یہ بتایا گیا تھا کہ یونس بن عمر یافعی کا کل انتقال ہوگیا ہے اور ان کی آخری رسومات میں شرکت کیلئے انہیں ضمانت پر رہا کیا جائے ۔ ہائیکورٹ کے جسٹس شریمتی ٹی رجنی نے درخواست کی سماعت کے بعد تینوں کو 15 دن کیلئے عبوری ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا اور 10 ہزار روپئے فی کس بطور ضمانت رقم جمع کرانے کی ہدایت دی ۔ گزشتہ سال چندرائن گٹہ حملہ کیس میں سیشنس کورٹ نے تینوں ملزمین کو 10 سال کی سزاء سنائی تھی جس کے بعد عبداللہ یافعی کو ورنگل سنٹرل جیل جبکہ حسن یافعی اور عود یافعی کو چیرلہ پلی سنٹرل جیل میں محروس رکھا گیا ۔ واضح رہے کہ یونس بن عمر یافعی جو محمد بن عمر یافعی المعروف محمد پہلوان کے بڑے بھائی تھے کا کل رات دومل گوڑہ کے ایک خانگی ہاسپٹل میں انتقال ہوگیا تھا اور ان کی میت کو ان کے مکان بالاپور بارکس منتقل کیا گیا ۔ خاندانی ذرائع نے بتایا کہ یونس یافعی کے برادر اور دو فرزندان کی عبوری ضمانت پر کل رہائی عمل میں آئے گی اور نماز جنازہ جامع مسجد بارکس بعد نماز عشاء مقرر ہے ۔ جبکہ تدفین ان کے آبائی قبرستان بالاپور میں عمل میں آئی ۔ یونس بن عمر یافعی کے انتقال کی خبر ملنے پرآج ایڈیٹر ’سیاست ‘جناب زاہد علی خاں نے محمد پہلوان سے ملاقات کرتے ہوئے انہیں پرسہ دیا ۔ روز نامہ منصف کے ایڈیٹر جناب خان لطیف خان،مجلس بچاؤ تحریک کے سابق کارپوریٹر اعظم پورہ مسٹر امجد اللہ خان خالدنے بھی یونس یافعی کے مکان پہونچ کر ان کے افراد خاندان کو پرسہ دیا۔

TOPPOPULARRECENT