Saturday , July 21 2018
Home / شہر کی خبریں / یونیورسٹی آف حیدرآباد میں ایم اے اردو کے کورس کو برخاست کردیا گیا

یونیورسٹی آف حیدرآباد میں ایم اے اردو کے کورس کو برخاست کردیا گیا

کم داخلوں پر یونیورسٹی کا فیصلہ ، اردو والے ہی اردو زبان کے زوال کے ذمہ دار
حیدرآباد۔4اپریل(سیاست نیوز) اردو زبان کے زوال کیلئے حکومتوں سے زیادہ اردو زبان والے ہی ذمہ دار بنتے جار رہے ہیں حکومتوں کی جانب سے منظم انداز میں اردو کو ختم کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے اور اردو والوں کی جانب سے اردو زبان میں اعلی تعلیم کے بجائے دیگر زبانوں کو فوقیت دیئے جانے کے سبب جامعات سے اردو زبان کے کورسس ختم ہوتے جا رہے ہیں۔ اردو زبان کی بقاء ترقی و ترویج اور اشاعت کیلئے بیانات جاری کرنے والے اور جدوجہد کرنے والوں کو چاہئے کہ وہ اردو زبان کے کورسس کو جامعات سے ختم ہونے سے بچانے کیلئے منظم حکمت عملی تیار کرتے ہوئے اردو ذریعہ تعلیم رکھنے والوں کی اعلی تعلیم کے انتظامات کو یقینی بنائیں۔ حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی میں ایم اے اردو کورس میں داخلے نہیں دیئے جائیں گے ۔ یونیورسٹی انتظامیہ نے تعلیمی سال 2018-19کے دوران ایم اے اردو میں داخلہ فراہم نہ کرنے کا اعلان کیا ہے اور کہا کہ اردو کے اس پوسٹ گریجویٹ کورس میں داخلہ حاصل کرنے والوں کی تعداد نہ ہونے کے سبب اس کورس کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اردو زبان کی حکومت کی جانب سے عدم سرپرستی کا شکوہ کرنے والوں کی جانب سے اگر اردو کے ان پوسٹ گریجویٹ کورسس میں داخلہ ہی حاصل نہ کئے جائیں تو یونیورسٹی میں ایسے کورس کس طرح چلائے جا سکتے ہیں۔ وائس چانسلر حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی پروفیسر پی اپا راؤ نے ایم اے اردو میں داخلہ کے لئے اعلامیہ کی عدم اجرائی کے سلسلہ میں دریافت کرنے پر بتایا کہ سال گذشتہ یونیورسٹی کو ایم اے اردو میں داخلہ کیلئے ملک بھر سے صرف 5 درخواستیں موصول ہوئیں جس کے نتیجہ میں یونیورسٹی انتظامیہ نے آئندہ تعلیمی سال کے دوران ایم اے اردو میں داخلہ فراہم نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یونیورسٹی میں کسی بھی کورس کا انحصار طلبہ اور اساتذہ کی درکار تعداد پر ہوتا ہے اور حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی میں شعبہ اردو مکمل ہے لیکن ایم اے اردو میں داخلہ کے لئے طلبہ کی عدم دلچسپی کے سبب اس کورس کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ پوسٹ گریجویٹ ایم اے اردو کورس کے داخلوں کو اعلامیہ میں شامل نہ کئے جانے کی بنیادی وجہ انہوں نے طلبہ کی داخلوں میں عدم دلچسپی قرار دیا اور کہا اس کے علاوہ علوم ارض و خلاء سائنس میں اساتذہ کی درکار تعداد نہ ہونے کے سبب اس کورس میں بھی داخلہ فراہم نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اسی طرح 4 ایم فل اور 8 پی ایچ ڈی کورسس میں بھی داخلہ نہ دیئے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT