Friday , December 15 2017
Home / سیاسیات / یوپی اے ٹی ایس :اصلاحی منصوبہ کے مثبت نتائج

یوپی اے ٹی ایس :اصلاحی منصوبہ کے مثبت نتائج

لکھنؤ، 27 اکتوبر ( سیاست ڈاٹ کام) شدت پسند نظریات سے متاثر ہو کر مخالف ملک سرگرمیوں کی جانب قدم بڑھانے والے گمراہ نوجوانوں کو صحیح راستے پر لانے کے لئے اترپردیش پولیس کے اینٹی ٹیریرسٹ اسکواڈ (اے ٹی ایس) کی طرف سے شروع کیا گیااصلاح پسند منصوبہ ابتدائی پس و پیش کے بعد رنگ لانے لگا ہے ۔اے ٹی ایس نے سماج دشمن اور ملک مخالف قوتوں کے علاوہ بین الاقوامی دہشت گرد تنظیموں کے بہکاوے میں آئے نوجوانوں کی صحیح رہنمائی کرکے انہیں پٹری پر لانے کے لیے ’ڈی ریڈ ‘نامی پروگرام تیار کیا تھا۔ اے ٹی ایس کو پروگرام کے ابتدائی دور میں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا،لیکن اگر اے ٹی ایس افسران کی مانیں تو اصلاح پسند منصوبہ ابھی ٹھوس شکل لے رہا ہے اور اس کے خوشگوار نتائج سامنے آنے لگے ہیں۔ اے ٹی ایس کے آئی جی اسیم ارون نے ’یو این آئی‘ سے خاص بات چیت میں کہا کہ منصوبہ سے جڑے حکام نے گمراہ نوجوانوں کو صحیح راہ دکھانے کے لیے سخت مشقت کی۔ ایسے نوجوان مردوں کے ساتھ بیٹھ کر عاجزی سے صحیح مشورہ دیا گیا۔ انہیں ان کے خوشگوار مستقبل کے لیے اچھے برے کے درمیان تمیز بتائی گئی۔ اس بارے میں غلط راستے پر چل رہے نوجوانوں کے گھر والوں سے خاصی مدد ملی۔ کئی مواقع پر اہل خانہ سے بھی مشاورت کی گئی۔انہوں نے کہاکہ عام طور پر جب کبھی ہم کسی گروپ کی نشاندہی کرتے ہیں یا کچھ دیگر قانونی تنظیم نے ہمیں ایسے نوجوانوں کے بارے میں معلومات کا اشتراک کرتی ہے تو ہم بغیر تاخیرکئے ایسے نوجوانوں کو آفس طلب کرتے ہیں اور ان سے پوچھ گچھ کرتے ہیں۔

محکمہ آثار قدیمہ نے سہارنپور ضلع جیل کو قومی ورثہ قرار دیا
سہارنپور، 27 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام ) محکمہ آثار قدیمہ نے سہارنپور ضلع جیل کو قومی یادگار قرار دیتے ہوئے اسے خالی کرنے اور عمارت میں کسی طرح کی کوئی تبدیلی کئے جانے پر بھی روک لگا دی ہے۔سہارنپور ضلع جیل کو 147 سال پہلے 1870 ء میں انگریزوں نے ضلع جیل کے طور پر استعمال کرنا شروع کر دیا تھا۔ محکمہ آثار قدیمہ کی تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ روہیلوں کے دورمیں یہ عمارت بادشاہ کا محل ہوا کرتا تھا۔

TOPPOPULARRECENT