Saturday , December 16 2017
Home / سیاسیات / یوپی میں صدر راج نافذ کرنے مولانا کلب جواد کا مطالبہ

یوپی میں صدر راج نافذ کرنے مولانا کلب جواد کا مطالبہ

NEW DELHI, INDIA - SEPTEMBER 15: Shia cleric Maulana Kalbe Jawad Naqvi addressing press conference condemning terrorist organization ISIS on September 15, 2014 on September 15, 2014 in New Delhi, India. A six-member team of Anjuman-e-Haideri led by Maulana Kalbe Jawad will be traveling to Iraq later this month to assess the situation and chalk out details for sending volunteers from India for humanitarian aid and protection of religious shrines from ISIS terrorists in the war-torn nation. (Photo by Raj K Raj/Hindustan Times via Getty Images)

لکھنو 28 جولائی (سیاست ڈاٹ کام ) سرکردہ شیعہ عالم دین مولانا کلب جواد نے الزام عائد کیا کہ اتر پردیش میں سماجوادی پارٹی کی حکمرانی میں ’ جنگل راج‘ جیسی صورتحال پیدا ہوچکی ہے۔ انہوں نے ریاست میں صدر راج نافذ کرنے کا مطالبہ کیا ۔ کلب جواد نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’ریاست میں جنگل راج ہے اور امن و قانون نہیں ہے ۔ ریاستی حکومت خود کو اقلیتوں کی ہمدرد ہونے کی دعویدار بتا رہی ہے لیکن لکھنو میں بے قصور مسلمانوں پر بہیمانہ انداز میں لاٹھی چارج کیا گیا ‘ ہم اس ریاست میں صدر راج کا مطالبہ کرتے ہیں‘‘۔ کلب جواد کو گذشتہ روز اُن کے حامیوں کے قیصر باغ میں اس وقت گرفتار کرلیا گیا تھا جب وہ حضرت گنج کے علاقہ میں شاہی مسجد کے روبرو مظاہرے کیلئے روانہ ہورہے تھے ۔ مولانا کلب جواد نے قبل ازیں حضرت گنج میں مظاہرے کے منصوبہ کا اعلان کیا تھا ۔ انہوں نے شیعہ وقف جائیدادوں کے بیجا استعمال کے خلاف احتجاجی جلوس نکالتے ہوئے شیعہ وقف بورڈ کے چیر مین وسیم رضوی کی برطرفی کا مطالبہ کیا۔ یہ جلوس پرانے شہر کے علاقہ سے شروع ہوا لیکن قیصر باغ کے قریب کلب جواد اور ان کے حامیوں کو گرفتار کرلیا گیا ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ پولیس نے گذشتہ روز بے رحمانہ انداز میں لاٹھی چارج کیا حتی کہ خواتین اور بچوں کو بھی بخشا نہیں گیا ۔

TOPPOPULARRECENT