Thursday , November 23 2017
Home / سیاسیات / یوپی میں عظیم اتحاد کے قیام کی کوشش

یوپی میں عظیم اتحاد کے قیام کی کوشش

پرشانت کشور کی اکھیلیش یادو سے تین گھنٹے تک بند کمرہ بات چیت
لکھنؤ ۔ 7 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس میں انتخابی حکمت عملی تیار کرنے والے پرشانت کشور نے ایس پی کے سربراہ ملائم سنگھ یادو سے گذشتہ روز طوفانی مذاکرات کے بعد آج یوپی کے چیف منسٹر اکھیلیش یادو سے بند کمرہ میں تفصیلی بات چیت کی۔ اس کے ساتھ ہی 2017ء کے دوران یہاں ہونے والے اسمبلی انتخابات کیلئے عظیم اتحاد کے قیام کی قیاس آرائیاں شروع ہوگئی ہیں۔ پرشانت کشور کی یہ ملاقات کو اس لئے بھی نمایاں اہمیت حاصل ہوگئی ہیکہ ٹکٹوں کی تقسیم کے علاوہ نشستوں کے انتخاب کے معاملہ میں 43 سالہ اکھیلیش یادو کو سماج وادی پارٹی میں بالادستی حاصل ہے۔ یہ قیاس آرائیاں کی جارہی ہیکہ بی جے پی کو کامیابی سے محروم رکھنے کیلئے سابق جنتا پریوار میں شامل پارٹیوں اور کانگریس کے مابین عظیم اتحاد بنایا جائے گا۔ اس کوشش میں کشور نے آج اکھیلیش سے ملاقات کی۔ یہ دونوں تقریباً 3 گھنٹے تک ایک ساتھ رہے۔ اس دوران باور کیا جاتا ہیکہ انہوں نے آئندہ انتخابات سے قبل ریاست کی سیاسی صورتحال کا بغور جائزہ لیا۔ تاہم ایسا محسوس ہوتا ہیکہ اکھیلیش محتاط رویہ اختیار کررہے ہیں اور کوئی جلدی میں نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ عظیم اتحاد کی صورت میں کس کو فائدہ اور کس کو نقصان ہوتا ہے۔ اس بات پر غور کرنے کی ضرورت ہے۔ اکھیلیش نے اس مسئلہ پر اپنے موقف کا برسرعام اعلان کرنے سے انکار کرتے ہوئے اخباری نمائندوں سے کہا کہ ’’انتخابات قریب ہیں۔ کس کو فائدہ ہوگا اور کس کو نقصان ہوگا اس بات کا نوٹ لینا ہوگا اور پارٹی کے قومی صدر ہی اس ضمن میں کوئی فیصلہ کریں گے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT