Tuesday , November 13 2018
Home / Top Stories / یوپی میں مساجد سے لاؤڈ اسپیکر ہٹانے کی ہدایت

یوپی میں مساجد سے لاؤڈ اسپیکر ہٹانے کی ہدایت

۔15 جنوری آخری تاریخ،مندروں ، گردواروں اور عام مقامات پربھی لاؤڈ اسپیکروں کے استعمال پر پابندی ، الہ آباد ہائی کورٹ کی سرزنش کا سہارا

لکھنؤ ۔ /7 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) اُترپردیش میں یوگی آدتیہ ناتھ حکومت نے آج مساجد سے لاؤڈ اسپیکر ہٹا دینے کی ہدایت دی ہے۔ الہ آباد ہائیکورٹ کے احکام سے حوصلہ پاکر حکومت نے 15 جنوری تک تمام لاؤڈ اسپیکرس نکال دینے کا ہدایت جاری کی ہے۔ مندروں، گردواروں اور دیگر عام مقامات پر بھی لاؤڈ اسپیکر پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔بتایا جاتا ہے کہ اترپردیش میں صوتی آلودگی پر الہ آباد ہائی کورٹ کی سرزنش کے بعد ریاستی حکومت نے عوامی مقامات پرمستقل اساس پر نصب شدہ لاؤڈ اسپیکرس کے استعمال کے بارے میں تفصیلی ہدایات جاری کی ہے ۔ الہ آباد ہائیکورٹ نے گزشتہ ماہ حکومت اترپردیش سے دریافت کیا تھا کہ مسجدوں ، مندروں ، گرجا گھروں اور گردواروں وغیرہ میں متعلقہ حکام سے تحریری اجازت حاصل کرنے کے بعد اعلان عام کے آلات اور لاؤڈ اسپیکرس نصب کئے گئے ہیں ۔ پرنسپال سکریٹری (داخلہ) اروند کمار نے کہا کہ ’’صوتی آلودگی پر کنٹرول کے قواعد پر عمل آوری کو یقینی بنانے سے متعلق عدالتی احکام کی ہدایات پر ایک سرکاری حکمنامہ جاری کیا گیا ہے جس میں تفصیلی ہدایات بیان کی گئی ہیں ‘‘ ۔ اروند کمار نے کہا کہ اس میں خاص طور پر یہ کہا گیا ہے کہ آواز اس مخصوص عوامی یا خانگی مقامات سے باہر نہ جائے ۔ 10 صفحات پر مشتمل اس حکمنامہ کے مطابق اب مستقل بنیادوں پر نصب شدہ تمام لاؤڈ اسپیکرس کا سروے درکار ہوگا ۔ نیز انہیں وجہ نمائی نوٹس جاری کی جائے جو درکار اجازت نامہ کا بغیر اس کا استعمال کررہے ہیں ۔ واضح رہے کہ گزشتہ سال منعقدہ یو پی اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی بھاری اکثریت سے کامیابی اور آر ایس ایس سے وابستہ سخت گیر ہندوتوا لیڈر یوگی آدتیہ ناتھ کو چیف منسٹر بنائے جانے کے بعد اس ریاست میں عدلیہ ، مقننہ اور عاملہ کے سہارے کئے گئے مختلف اقدامات کے ذریعہ مسلم اقلیت کو سلسلہ وار انداز میں نشانہ بنایا جاتا رہا ہے ۔ جس میں گاؤکشی قواعد میں مزید سختی ، گاؤرکھشا کے نام پر کارروائی ، سرکاری مدرسوں میں متنازعہ طریقہ کار ، بعض دینی مدرسوں کو فرضی قرار دیتے ہوئے مسلمہ موقف ختم کرنے کے علاوہ ، دینی مدرسوں کی تعطیلات میں کمی ، عیدمیلاالنبیﷺ کی تعطیل کی منسوخی ، حتی کہ حج ہاؤز کی عمارت پر زعفرانی رنگ کرنے جیسے اقدامات بھی شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT