Tuesday , December 12 2017
Home / ہندوستان / یوپی میں مسلمانوں کی صورتحال پر ہفتہ کو اجلاس

یوپی میں مسلمانوں کی صورتحال پر ہفتہ کو اجلاس

نئی دہلی، 11 فروری (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش میں بڑھتی ہوئی لاقانونیت ، فرقہ وارانہ تعصب اور اقتدار میں آنے سے پہلے سماج وادی پارٹی نے مسلمانوں سے کئے گئے وعدے پورے نہ کرنے سے پیدا شدہ سنگین صورت حال پر غور کرنے کیلئے شاہی امام سید احمد بخاری نے ہفتہ20  فروری کو مسلم نمائندوں کی ایک میٹنگ لکھنو میں طلب کی ہے ۔آج یہاں جاری ایک بیان میں اترپردیش میں برسراقتدار سماج وادی پارٹی نے اسمبلی انتخابات سے پہلے مسلمانوں سے ان کی فلاح و بہبود ، تعلیم و ترقی، روزگار، جان و مال کا تحفظ ، برسوں سے جیلوں میں بند بے قصور مسلم نوجوانوں کی رہائی، ریزرویشن ، اردو ٹیچرز کی تقرری ، قانون و انتظام کی بحالی، سرکاری اردو میڈیم اسکولوں کا قیام ، فورسز میں مسلمانوں کی بھرتی، انصاف اور زندگی کے ہر شعبہ میں آبادی کے تناسب سے مسلمانوں کو نمائندگی دینے کے وعدے کئے تھے ۔بیان میں کہا گیا ہے کہ ریاست کے مسلمانوں نے ان وعدوں پر یقین کرتے ہوئے سماجوادی پارٹی کو مکمل اکثریت کے ساتھ اقتدار میں بٹھایا۔ لیکن ریاستی حکومت کی وعدہ فراموشی سے مسلمانوں میں زبردست بے چینی اور مایوسی پائی جاتی ہے ۔اترپردیش کی موجودہ سیاسی صورت حا ل پر غور کرنے اور سماجوادی پارٹی کو اس کے وعدے یاد دلانے کیلئے مسلم نمائندوں کی یہ میٹنگ لکھنو میں طلب کی گئی ہے۔ لکھنو کے علاوہ الہ آباد، وارانسی ، گورکھپور ، دیوریا، بجنور، سیتاپور، مظفر نگر، اٹاوہ، علیگڑھ ، کانپور ، مرادآباد، مہوبہ، اور دیگر اضلاع کے مسلم نمائندوں کو شرکت کی دعوت دی گئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT