Saturday , September 22 2018
Home / دنیا / یوکرین پر مغرب کا سفارتی دباؤ، صورتحال سنگین:اوباما

یوکرین پر مغرب کا سفارتی دباؤ، صورتحال سنگین:اوباما

کیف 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مغربی ممالک اور روسی قائدین کے درمیان ایک دن سے یوکرین کے بحران کے بارے میں سفارتی رسہ کشی جاری ہے۔ جبکہ صدر امریکہ بارک اوباما نے انتباہ دیا ہے کہ صورتحال انتہائی سنگین ہے اور روس سے کہا ہے کہ کریمیا میں اپنے کردار کے بارے میں وہ کسی کو بھی بیوقوف نہیں بناسکتا۔ دریں اثناء وزیر خارجہ امریکہ جان کیری نے وزیر

کیف 5 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مغربی ممالک اور روسی قائدین کے درمیان ایک دن سے یوکرین کے بحران کے بارے میں سفارتی رسہ کشی جاری ہے۔ جبکہ صدر امریکہ بارک اوباما نے انتباہ دیا ہے کہ صورتحال انتہائی سنگین ہے اور روس سے کہا ہے کہ کریمیا میں اپنے کردار کے بارے میں وہ کسی کو بھی بیوقوف نہیں بناسکتا۔ دریں اثناء وزیر خارجہ امریکہ جان کیری نے وزیر خارجہ روس سرجی لاؤروف سے ملاقات کی۔ لبنان کے موضوع پر پیرس میں ایک کانفرنس کے دوران علیحدہ طور پر اِس بات چیت کے دوران جان کیری نے الزام عائد کیاکہ صدر روس ولادیمیر پوٹین یوکرین کے خلاف فوجی کارروائی کرنے کا بہانہ ڈھونڈ رہے ہیں۔ امریکہ نے روس پر اپنے دباؤ میں اضافہ کردیا ہے اور پوٹین اِس بحران سے باہر نکلنے کا راستہ تلاش کررہے ہیں۔ بارک اوباما نے چانسلر جرمنی انجیلا مرکل سے کل ٹیلیفون پر بات چیت کی۔ دونوں قائدین نے اتفاق کیاکہ یوکرین پر پیدا شدہ کشیدگی دور کرنے کی ضرورت ہے۔ بین الاقوامی مبصرین اور روس کے درمیان کیف میں کل مذاکرات کا آغاز ہوگا۔ مغربی ممالک کے سفارت کاروں نے پورے یوروپ میں سب سے وسیع ملک یوکرین میں بات چیت کے ذریعہ کشیدگی دور کرنے کی کوشش شروع کردی ہے۔

TOPPOPULARRECENT