Thursday , September 20 2018
Home / دنیا / یوکرین پر یوروپی حلیفوں سے اوباما کی ملاقات

یوکرین پر یوروپی حلیفوں سے اوباما کی ملاقات

G-7 چوٹی کانفرنس میںغیر حاضر صدر روس پوٹین غالب موضوع

G-7 چوٹی کانفرنس میںغیر حاضر صدر روس پوٹین غالب موضوع
بروسلز 5 جون (سیاست ڈاٹ کام) صدر امریکہ بارک اوباما 2 انتہائی اہم یوروپی حلیفوں سے ملاقات کررہے ہیں تاکہ یوکرین بحران بشمول نئی حکومت کے برسر اقتدار آنے کے ذریعہ حالات تبدیل کرنے پر غور کیا جاسکے۔ بروسلز میں G-7 چوٹی کانفرنس کے موقع پر عالمی قائدین کا اجتماع ہورہا ہے۔ جس کے دوران صدر اوباما وزیراعظم برطانیہ ڈیوڈ کیمرون اور صدر فرانس فرینکوی اولاند سے ملاقات کا پروگرام رکھتے ہیں۔ یوکرین میں روس کا ملوث ہونا سرفہرست موضوع ہے۔

یوروپی قائدین علیحدہ طور پر صدر روس ولادیمیر پوٹین سے ملاقاتیں کرنے کا منصوبہ بھی بنارہے ہیں۔ جبکہ اوباما ایسی تمام ملاقاتوں سے لاتعلق رہیں گے۔ صدر روس ولادیمیر پوٹین G-7 چوٹی کانفرنس میں شامل نہیں ہیں کیونکہ اُنھیں یوکرین بحران کی وجہ سے G-8 گروپ سے خارج کردیا گیا ہے۔ لیکن G-7 چوٹی کانفرنس کا غالب موضوع صدر روس ولادیمیر پوٹین ہی تھے۔ایسا معلوم ہوتا ہے کہ پوٹین نے بروسلز میں منعقد نہ کئے جانے کی کوئی پرواہ نہیں کی ہے۔ تاہم اُنھوں نے دوبارہ اعلان کیا ہے کہ وہ بات چیت کے لئے ہمیشہ تیار رہیں گے۔ مارچ میں امریکہ اور اِس کے بیشتر اہم حلیف ممالک نے پوٹین کے فوجی قبضہ اور بعدازاں یوکرین کے جزیرہ نما کریمیا کو روس میں شامل کرنے کے خلاف اہم فیصلے کئے تھے۔ اُنھیں G-8 سے خارج کردیا گیا۔ پوٹین کی جانب سے سوچی میں G-8 چوٹی کانفرنس کے انعقاد کو بھی روک دیا گیا۔ 2014 ء کے موسم سرما کے اولمپکس کا روس میزبان تھا لیکن یہ پروگرام بھی منسوخ کردیا گیا ہے۔ بروسلز میں صرف 7 ممالک G-7 چوٹی کانفرنس میں شرکت کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT