Tuesday , June 19 2018
Home / ہندوستان / یوگا کو تجارتی رنگ دینے میں کوئی قباحت نہیں

یوگا کو تجارتی رنگ دینے میں کوئی قباحت نہیں

ممبئی ۔ 23 ۔ جون : ( سیاست ڈاٹ کام) : دہلی میں یوگا ڈے تقاریب کے کامیاب انعقاد پر وزیر اعظم نریندر مودی کی ستائش کرتے ہوئے شیوسینا نے آج کہا کہ یوگا کی آڑ میں تجارت کوئی خراب بات نہیں ہے ۔ لیکن اسے فروغ سیاحت اور فراہمی روزگار کے لیے کارآمد بنانا چاہئے ۔ پارٹی کے ترجمان سامنا کے اداریہ میں یہ تبصرہ کیا گیا ہے کہ وزیر اعظم کا کہنا ہے کہ یوگ

ممبئی ۔ 23 ۔ جون : ( سیاست ڈاٹ کام) : دہلی میں یوگا ڈے تقاریب کے کامیاب انعقاد پر وزیر اعظم نریندر مودی کی ستائش کرتے ہوئے شیوسینا نے آج کہا کہ یوگا کی آڑ میں تجارت کوئی خراب بات نہیں ہے ۔ لیکن اسے فروغ سیاحت اور فراہمی روزگار کے لیے کارآمد بنانا چاہئے ۔ پارٹی کے ترجمان سامنا کے اداریہ میں یہ تبصرہ کیا گیا ہے کہ وزیر اعظم کا کہنا ہے کہ یوگا کو تجارت کے لیے استعمال نہیں کیا جانا چاہئے ۔ لیکن وزیر اعظم اپنے آپ کو ایک تاجر ( ٹریڈر ) قرار دیتے ہیں ۔ جن کا یہ دعویٰ ہے کہ وہ ایک گجراتی ہیں اور ان کے خون میں تجارت رچ بس گئی ہے ۔ اگر یوگا کو دنیا بھر میں کاروبار کا ذریعہ بنایا جاتا ہے تو کیا قباحت ہے اور یوگا ٹورازم کو فروغ دیا جاتا ہے تو کسی کو کوئی مسئلہ نہیں ہوگا ۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے اتوار کے دن یوگا تقریب کے موقع پر یوگا کو تجارتی رنگ دینے کے خلاف متنبہ کیا تھا اور کہا تھا کہ اگر اسے تجارتی مقاصد کے لیے استعمال کیا جاتا ہے تو اس عالمی ورثہ کو زبردست نقصان پہنچے گا ۔ انہوں نے کہا تھا کہ اگر ہم یوگا کو بازاری شئے بنادیں گے تو ہم خود اسے نقصان پہنچانے کے ذمہ دار ہوں گے ۔ یوگا کوئی تجارتی مال ہے اور نہ ہی کوئی برانڈ ہے ۔ جسے بازار میں فروخت کیا جاسکتا ہے ۔ شیوسینا نے وزیر اعظم کے بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ یوگا ٹورازم میں یقینا اضافہ ہوگا اور بیرونی سیاح کی کثیر تعداد ہندوستان آئے گی ۔ جس کے نتیجہ میں فراہمی روزگار کے ساتھ بیرونی زر مبادلہ میں اضافہ ہوگا ۔ کیا ہم یہ تصور کرسکتے ہیں کہ دیگر ایام کو اقوام متحدہ بزنس ڈے کے طور پر منائے گا لہذا یوگا ڈے کے موقع پر مصنوعات کی فروخت پر کوئی اعتراض نہیں ہونا چاہئے ۔۔

TOPPOPULARRECENT