Saturday , November 25 2017
Home / Top Stories / یوگا کے ذریعہ دنیا کو ہندوستان سے مربوط کردیا گیا : وزیراعظم

یوگا کے ذریعہ دنیا کو ہندوستان سے مربوط کردیا گیا : وزیراعظم

ملک بھر میں تیسرا عالمی یوگا، لکھنؤ میں بڑی تقریب ، نریندر مودی کے بشمول کئی شخصیتوں نے حصہ لیا
لکھنؤ ؍ نئی دہلی۔ 21 جون (سیاست ڈاٹ کام) ملک بھر کے لاکھوں عوام اور دنیا بھر میں آج وزیراعظم نریندر مودی کے ساتھ تیسرا عالمی یوم یوگا منایا۔ اس موقع پر دنیا بھر میں لوگوں نے ہندوستان کے ساتھ مل کر یوگا آسنس کئے۔ سب سے بڑی تقریب لکھنؤ میں منعقد ہوئی جہاں وزیراعظم نے کہا کہ یوگا کے ذریعہ دنیا کو ہندوستان سے مربوط کردیا گیا۔ لکھنؤ میں رما بائی امبیڈکر میدان پر اور دہلی میں کناٹ پیلیس کے سبزہ زار سے لے کر لندن اور چین میں گریٹ وال تک یوگا آسنوں کے مناظر دیکھے گئے۔ ہندوستان میں یوگا کی بنیاد اور روایت کو فروغ دیتے ہوئے اس میں لاکھوں افراد کو شامل کیا گیا ہے۔ سفید ٹی شرٹ اور پینٹ میں ملبوس نریندر مودی نے رما بائی امبیڈکر میدان پر جمع 51,000 افراد میں شریک ہوگئے اور یوگا کے مختلف آسن کئے۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ یوگا اب ہر شخص کی زندگی کا حصہ بن چکا ہے۔ کئی ممالک جو ہماری زبان، روایات یا ثقافت سے واقف نہیں ہیں۔ اب یوگا کے ذریعہ ہندوستان سے جڑ رہے ہیں۔ یوگا ایک ایسا عمل ہے جس سے سارا جسم، ذہن اور روح کو تازگی حاصل ہوتی ہے۔ یوگا ساری دنیا کو یکجا کرنے میں بڑا رول ادا کرتا ہے۔ لکھنؤ اور دہلی میں بارش کی رم جھم نے اس پروگرام کو تھوڑا سرد بنا دیا تھا لیکن عوام کے جذبہ اور جوش کے سامنے یہ بارش کا اثر بھی بے اثر دکھائی دیا۔ عوام پارکوں اور عوامی مقامات پر جمع ہوکر یوگا کررہے تھے۔ اترپردیش کے دارالحکومت لکھنؤ میں جہاں نریندر مودی کے ساتھ گورنر رام نائیک اور چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ میں شریک تھے۔ وزیراعظم نے عوام سے اظہار تشکر کیا کہ وہ بارش کے باوجود بڑی تعداد میں یوگا کے لئے پہونچے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یوگا سے عوام کی دلچسپی ان کی روزمرہ زندگی کے عوامل کا ایک حصہ بن چکی ہے۔ مجھے یہ دیکھ کر خوشی ہورہی ہے کہ گزشتہ تین سال کے دوران یوگا کے کئی ادارے کام کررہے ہیں۔ یوگا ٹیچرس کی مانگ میں اضافہ ہوا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ میں عوام پر زور دیتا ہوں کہ وہ یوگا کو اپنی زندگی کا حصہ بنالیں۔ دہلی میں صبح صادق سے ہی بارش کا آغاز ہوچکا تھا، اس کے باوجود شہر بھر میں یوگا کے مخصوص مقامات پر لوگ جمع ہونے لگے۔ تقریباً 77,700 لوگ یوگا آسنوں کے ذریعہ اپنے جسم کو تندرست رکھنے کی ترکیب سیکھی۔ آیوش وزارت کے عہدیداروں کے مطابق لال قلعہ کے سبزہ زار پر تقریباً 50,000 افراد نے حصہ لیا۔ اس کے بعد کناٹ پیلیس پر 10,000 یوگا شائقین کو آسن کرتے دیکھا گیا۔ دہلی کے ڈی ڈی اے پارک پر 900 لوگوں نے یوگا کیا۔ کناٹ پیلیس کے داخلی علاقوں اور سڑکوں پر بھی جہاں موٹر گاڑیوں کی نقل و حرکت کو روک دیا گیا تھا، یوگا کے لئے عوام کو جگہ فراہم کی گئی تھی۔ جہاں ایک تہوار کا منظر آرہا تھا۔ ہر عمر کے ضعیف اور جوان رنگارنگ کپڑوں میں ملبوس یوگا کے مختلف آسن کرتے نظر آئے۔ لودھی گارڈن، نہرو پارک تا لکھنؤ گارڈن اور چلڈرنس پارک انڈیا گیٹ کے علاوہ دیگر علاقوں میں داخلی سڑکوں پر میاٹس بچھائے گئے تھے جس پر عوام نے یوگا کیا۔ نئی دہلی میونسپل کونسل نے انتظامات کئے۔ اگرچیکہ بارش جمع سے ہی شروع ہوچکی تھی۔ اس لئے میاٹس قالین پوری طرح نم ہوچکی تھیں لیکن عوام نے اپنے شوق اور جوش کو ضائع ہونے نہیں دیا بلکہ پورے جذبہ کے ساتھ یوگا کے آسنوں میں حصہ لیا۔ مرکزی وزراء ایم وینکیا نائیڈو، اجئے گوئل، دہلی لیفٹننٹ گورنر انیل بیجال اور چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال نے بھی بی جے پی کے صدارتی امیدوار رام ناتھ کووند کے ہمراہ یوگا کیا۔ مرکزی حکومت کے کئی وزارتوں نے اپنے دفاتر کے احاطہ میں یوگا کیلئے انتظامات کئے تھے۔

 

عالمی یوم یوگا میں حصہ لینے کے بعد 21 افراد علیل
لکھنؤ۔ 21 جون (سیاست ڈاٹ کام) لکھنؤ کے درمیان امبیڈکر گراؤنڈس کو وزیراعظم نریندر مودی کی قیادت میں منعقدہ عالمی یوم یوگا پروگرام میں حصہ لینے والے 21 افراد علیل ہوئے۔ خراب موسم کے باعث بیمار پڑنے سے یوگا پروگرام پر منفی اثرات مرتب ہوئے۔ بیمار ہونے والوں میں بچے بھی شامل ہیں۔ بارش اور سرد ہوا کے باعث یوگا میں حصہ لینے والے 21 افراد کو زکام ہوگیا اور سردی کا عارضہ لاحق ہوا جنہیں فوری دواخانہ میں شریک کیا گیا۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کشال رائے رائے شرما نے کہا کہ تمام علیل افراد کا دواخانہ میں علاج کروایا گیا۔ لوک بندھو ہاسپٹل میں انہیں شریک کیا گیا ہے۔ بعدازاں صحت میں بہتری پر ڈسچارج کردیا گیا۔ وزیراعظم نے یوم یوگا پروگرام میں حصہ لینے والے صبح ہی سے اس مقام پر جمع ہوئے تھے لیکن صبح 4 تا 4:30 بجے کے درمیان شدید بارش اور تیز ہواؤں کی وجہ سے لوگ خاص کر بچے متاثر ہوئے ہیں۔ منتظمین نے ہیلتھ کیر کا بندوبست کیا تھا اور عارضی طور پر 8 بستر والا دواخانہ میں قائم کیا تھا۔ 24 امبولنس اور 20 موبائیل اسٹریچرس کو بھی اس مقام پر دستیاب رکھا گیا تھا۔

 

TOPPOPULARRECENT