Friday , November 24 2017
Home / ہندوستان / یو اے ای کو پٹرو پراجکٹس میں حصص کی پیشکش

یو اے ای کو پٹرو پراجکٹس میں حصص کی پیشکش

گجرات ، مدھیہ پردیش ، آندھرا کے مختلف پراجکٹوں کی نشاندہی
دوبئی ۔ 12 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان نے یو اے ای کو پٹرو کیمیکلس پلانٹس اور ریفائنری پراجکٹوں میں حصص کی پیشکش کی ہے کیونکہ وہ نقدی سے مالا مال خلیجی قوم کے ساتھ توانائی کے شعبہ میں اپنے روابط کو فروغ دینے کوشاں ہے۔ وزیر تیل دھرمیندر پردھان نے جو متحدہ عرب امارات کے دو روزہ دورہ پر ہیں ، ہندوستان میں تیل اور گیاس کے شعبہ میں منصفانہ ، شفاف اور پرکشش پالیسی نظام برائے سرمایہ کاری کا وعدہ کیا ہے جس کے لئے ضروری اقدامات کئے جارہے ہیں۔ وہ دوبئی میں صنعت کی بڑی شخصیتوں سے خطاب کررہے تھے ۔ انھوں نے یو اے ای کیلئے سرمایہ کاری مواقع کو اُجاگر کیا ، جس نے ہندوستان میں گزشتہ سال اگسٹ میں 75 بلین امریکی ڈالر کی سرمایہ کاری کا عہد کیا تھا ۔ سرکاری ملکیت والے آئیل اینڈ نیچرل گیاس کارپوریشن ( او این جی سی ) کے دہج ( گجرات ) میں شروع کئے جانے والے پٹرو کیمیکل پراجکٹ میں 26فیصد حصص کی 700 ملین امریکی ڈالر کے عوض پیشکش دستیاب ہے ۔ اس کے علاوہ مدھیہ پردیش میں بھارت پٹرولیم کارپوریشن لمیٹیڈ (بی پی سی ایل ) کی ذیلی بینا ریفائنری کی جانب سے 200 ملین ڈالر کی قدر والے 24 فیصدی حصص بھی دستیاب ہیں نیز ایچ پی سی ایل کے ساحل آندھرا پر پٹرو کیمیکل پلانٹ میں بھی یو اے ای 25 تا 40 فیصد شیئرس حاصل کرتے ہوئے 530 تا 850 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کرسکتا ہے ۔

 

وزیر تیل نے ان تفصیلات کے ساتھ یہ بھی کہا کہ یہ خلیجی مملکت مذکورہ بالا پراجکٹوں کے علاوہ مہاراشٹرا اور جگدیش پور ۔ ہلدیا اور پردیپ ۔ سورت گیاس پائپ لائنوں میں بھی 60 ملین ٹن گیاس کے حصول کے سلسلے میں اپنا سرمایہ مشغول کرسکتی ہے ۔ انھوں نے کہا کہ یو اے ای کا ہماری تیل درآمدات میں 8 فیصد حصہ ہے ۔ ہم یو اے ای سے مزید تیل درآمد کرنے کوشاں ہیں۔ 2016-17 ء میں ہمارا منصوبہ ہے کہ 2015-16 ء کی 16.11 ملین ٹن تیل کی خریداری کے مقابل 2.5 ملین ٹن زیادہ تیل درآمد کیا جائے ۔ ایک سرکاری بیان میں کہا گیا کہ وزیر موصوف نے بزنس کے قائدین کے ساتھ میٹنگ میں ہندوستان اور امارات کے درمیان عظیم تر معاشی اور کلیدی روابط پر زور دیا ہے ۔ ہند ۔ یو اے ای تجارت گزشتہ نصف صدی میں غیرمعمولی بڑھی ہے ۔ یہ 1970 کے دہے میں سالانہ 180 ملین ڈالر سے اب 16 بلین ڈالر ہوچکی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT