Saturday , June 23 2018
Home / سیاسیات / یو پی ایس سی تنازعہ پر حکومت کا کُل جماعتی اجلاس

یو پی ایس سی تنازعہ پر حکومت کا کُل جماعتی اجلاس

نئی دہلی۔ 6 اگست (سیاست ڈاٹ کام) یو پی ایس سی کے تنازعہ پر اپوزیشن کی تنقید کا شکار حکومت نے آج فیصلہ کیا کہ اس مسئلہ پر ایک کُل جماعتی اجلاس طلب کیا جائے، جبکہ ایسے اشارہ ظاہر ہورہے ہیں کہ حکومت ، سیول سرویسیس ابتدائی امتحان جو 24 اگست کو مقرر ہے، ملتوی کرنے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتی۔ اس معاملہ پر گزشتہ ہفتہ کے دوران پارلیمانی کارروائی

نئی دہلی۔ 6 اگست (سیاست ڈاٹ کام) یو پی ایس سی کے تنازعہ پر اپوزیشن کی تنقید کا شکار حکومت نے آج فیصلہ کیا کہ اس مسئلہ پر ایک کُل جماعتی اجلاس طلب کیا جائے، جبکہ ایسے اشارہ ظاہر ہورہے ہیں کہ حکومت ، سیول سرویسیس ابتدائی امتحان جو 24 اگست کو مقرر ہے، ملتوی کرنے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتی۔ اس معاملہ پر گزشتہ ہفتہ کے دوران پارلیمانی کارروائی میں خلل اندازی ہوئی اور آج بھی راجیہ سبھا دہل کر رہ گئی۔ سی پی آئی ایم، سی پی آئی، ایس پی اور بی ایس پی نے وزیر مملکت برائے پارلیمانی اُمور پرکاش جاؤدیکر کے اس مسئلہ پر بیان پر عدم اطمینان ظاہر کرتے ہوئے اجلاس سے واک آؤٹ کیا۔ جاؤدیکر کا ادعا تھا کہ یہ ایک حساس مسئلہ ہے، جس کے کئی پہلو ہیں۔ اس لئے بڑے پیمانے پر امتحان کے انداز میں اصلاح کے لئے مباحث ضروری ہیں۔ اپوزیشن ارکان کے ان مطالبات کا حوالہ دیتے ہوئے کہ اس سلسلے میں رام گوپال یادو نے انہیں تجویز پیش کی ہے۔ جاؤدیکر نے کہا کہ ایک کُل جماعتی اجلاس یقینی طور پر منعقد کیا جائے گا بشرطیکہ ضروری ہو۔ ایسے مزید کئی اجلاس بھی منعقد کئے جاسکتے ہیں۔ 9 لاکھ طلبہ 24 اگست کے یو پی ایس سی کے ابتدائی امتحان کی تیاری کررہے ہیں،اس لئے مرکزی وزیر نے ارکان پر زور دیا کہ ہماری نیک خواہشات ان سب کے ساتھ ہیں، جو 24 اگست کے امتحان میں شرکت کرنے والے ہیں، اس سے صاف ظاہر ہوتا تھا کہ حکومت امتحان ملتوی کرنا نہیں چاہتی۔

TOPPOPULARRECENT