Tuesday , December 18 2018

یو پی اے دور میں پالیسی سازی میں تاخیر سے دفاعی تیاری متاثر

ہم ملک کی حفاظت کی طرح قیام امن کیلئے بھی پرعزم ۔ ڈیفنس ایکسپو کا افتتاح ۔وزیر اعظم نریندر مودی کاخطاب
تھرو ویدنتائی ( ٹاملناڈو ) 12 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ جس طرح ملک کی سرزمین کی حفاظت کرنے کا عزم مستحکم ہے اسی طرح امن کیلئے بھی عزم مستحکم ہے اور ان کی حکومت ملک کی مسلح افواج کو ان کی طاقت میں اضافہ کیلئے جو کچھ درکار ہے وہ فراہم کرنے کیلئے تیار ہے ۔ وزیر اعظم نے ڈیفنس ایکسپو کا افتتاح کرنے کے بعد یہ ریمارکس کئے جو اس پس منظر میں ہے کہ چین کی جانب سے ہندوستان کے ساتھ ملنے والی تقریبا 4,000 کیلومیٹر کی سرحدپر سرگرمیاں جاری ہیں۔ اس کے علاوہ چین انڈو ۔ پیسیفک علاقہ میں اپنے اثر کو بڑھانے کیلئے بھی کوشاں ہے ۔ ہندوستان ہی میں دفاعی پیداوار کو فروغ دینے حکومت کی کوششوں کا تذکرہ کرتے ہوئے مودی نے سابقہ یو پی اے حکومت پر پالیسی مفلوج کردینے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ اس کی وجہ سے ملک کی فوجی تیاریوں پر اثر ہوا ہے ۔ مودی نے کہا کہ ایک ایسا وقت تھا جب پالیسی فیصلے کرنے میں تاخیر کی وجہ سے دفاعی تیاریوں کا اہم ترین مسئلہ بھی متاثر ہوکر رہ گیا ۔ اس طرح نا اہلی ‘ لا پرواہی اور شائد کچھ پوشیدہ مقاصد کی وجہ سے ملک کو نقصان ہوا ہے ۔ تاہم اب مزید ایسا نہیں ہو رہا ہے اور نہ پھر کبھی ایسا ہوگا ۔ اس تقریب میں بیرونی اور ہندوستانی دفاعی فرمس کے اعلی ایگزیکیٹیوز بھی موجود تھے ۔ حالانکہ چار روزہ ڈیفنس ایکسپو کل شروع ہوا تھا تاہم اس کا رسمی طور پر افتتاح وزیر اعظم نے آج کیا ۔

اس ایکسپو میں وزیر دفاع نرملا سیتارامن ‘ گورنر ٹاملناڈو بنواری لال پروہت ‘ ریاست کے چیف منسٹر ی کے پلانی سوامی ‘ ڈپٹی چیف منسٹر او پنیرا سیلوم اور دوسرے ممالک کے نمائندے بھی شرکت کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنے امن کی حفاظت بھی اتنی ہی شدت سے کرنا چاہتے ہیں جتنی شدت سے ہم اپنی سرزمین کی حفاظت کرتے ہیں۔ اس کیلئے ہم اپنی مسلح افواج کو عصری آلات سے لیس کرنے جو کچھ ضروری ہے وہ کرنے تیار ہیں۔ وزیر اعظم کے دورہ ٹاملناڈو کے موقع پر کاویری آبی تنازعہ کے مسئلہ پر ریاست میں بڑ ے پیمانے پر احتجاج بھی ہوا ۔ وزیر اعظم نے مسلح افواج کو عصری بنانے کے تعلق سے بھی اظہار خیال کیا اور کہا کہ سابقہ یو پی اے حکومت نے طویل لیکن ناکامیاب کوششیں کی تھیں جس کی وجہ سے میڈیم ملٹی رول کمباٹ ائرکرافٹ کے حصول میں ناکامی ہوئی ۔ انہوں نے یاد دہانی کروائی کہ لڑاکا طیاروں کے حصول کا جو طویل عمل تھا وہ کسی نتیجہ تک نہیں پہونچا ۔ ہم نے نہ صرف فوری اہمیت کی حامل ضروریات کی تکمیل کا حوصلہ مندانہ فیصلہ کیا بلکہ ایک نیا طریقہ کار بھی شروع کیا تاکہ ہم مزید 110 لڑاکا طیارے خیرد سکیں۔ حکومت نے گذشتہ ہفتے یہ عمل شروع کیا تھا اور ابتدائی ٹنڈر کی اجرائی عمل میں لائی تھی ۔ یہ حکومت کی جانب سے ایم ایم آر سی اے کے حصول کی کوششوں کو ترک کردئے جانے کے بعد لڑاکا طیارے حاصل کرنے کی اولین کوشش ہے ۔ امن و استحکام کیلئے ہندوستان کی کوششوں کا حواہ دیتے ہوئے نریندر مودی نے کہا کہ ہندوستانی سپاہیوں نے دوسری جنگ عظیم کے دوران قربانیاں پیش کی تھیں اور ملک نے ہمیشہ ہی عالمی امن ‘ اتحاد اور خیرسگالی میں اپنا رول ادا کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان دلوں کو جیتنے میں یقین رکھتا ہے ۔ فوج کو عصری بنانے پر حکومت کی توجہ کا تذکرہ کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت نے دفاعی مہارت میں تخلیق کی اسکیم شروع کی ہے جس کے تحت دفاعی تخْلیقی مراکز ملک بھر میں قائم کئے جائیں گے اور ممکنہ مدد فراہم کی جائے گی ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT